کرتار پور راہداری کی تکمیل پر حکومت کو مبارکباد پیش کرتا ہوں:وزیراعظم

اسلام آباد(مختنصر عباس) کرتار پور راہداری کی رکارڈ مدت میں تکمیل پر حکومت کو مبارکباد، پاکستان سکھ یاتریوں کا، خیرمقدم کرنے کیلئے تیارہیں، وزیراعظم نے اپنے ٹوئٹ میں کہاہے کہ بابا گورونانک کی 550ویں سالگرہ پر راہداری مکمل ہو رہی ہے۔

 

امن کی نئی تاریخ رقم ہونے کے قریب ہے، سکھ برادرای کا خواب اور عمران خان کا سکھوں سے کیا وعدہ پورا ہونے جا رہا ہے۔ کرتارپور راہداری کا افتتاح نو نومبر کو ہو گا۔ سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر اکاؤنٹ پر وزیراعظم عمران خان نے اپنے ٹویٹ میں کہا کہ سکھ یاتریوں کے خیر مقدم کے لیے کرتار پور پوری طرح تیار ہے۔ گرونانک جی کے 550 ویں جنم دن کی تقریبات کے لئے ریکارڈ مدت میں کرتا پور تیار کرنے پر اپنی حکومت کو دلی مبارکباد پیش کرتا ہوں۔

وزیراعظم عمران خان ہندوستان سے آنے والے سکھ یاتریوں کے لیے 2 شرائط میں چھوٹ کا اعلان بھی کر چکے ہیں، یاتریوں کو پاسپورٹ کی ضرورت نہیں ہو گی، صرف شناختی کارڈ درکار ہو گا۔ دس روز قبل اندراج کرانے کی شرط بھی ختم ہو چکی ہے۔ گوردوارہ کرتارپور صاحب میں سکھ یاتریوں کے لیے خصوصی انتظامات کیے گئے ہیں۔ یاتریوں کو زیرولائن سے لانے کے لیے شٹل سروس کا انتظام ہے، گورودوارہ کے اردگرد وسیع و عریض سرسبز پارک، لنگر خانے اور باتھ رومز سمیت تمام سہولیات موجود ہیں۔

9نومبر کو کرتار پور میں دنیا کے بڑے گورودوارے کا فقیدالمثال افتتاح کیا جائے گا۔ یہ ایک تاریخی اور یاد گار واقعہ ہو گا کہ دونوں ممالک کے درمیان اس نوعیت کا کوئی قابلِ عمل معاہدہ اور رابطہ اس سے قبل عملی شکل میں طے نہیں پایا۔ اس سے قبل سرحد پار سکھ "درشن استھل" سے دوربین کے ذریعے گورودوارہ بابا گرو نانک کا درشن کرتے تھے۔ انڈین بارڈر سے یہ مقام محض تین کلو میٹر کی مسافت پر ہے، لیکن اس 3 کلو میٹر مسافت کو طے کرنے کے لیے انہیں سات دہائیوں تک انتظار کرنا پڑا۔

عطاء سبحانی  1 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں