امریکی صدر ٹرمپ نے مسئلہ کشمیر پر ثالثی کی پیشکش کردی

 

واشنگٹن(پبلک نیوز) وزیراعظم عمران خان کی وائٹ ہاؤس آمد، صدر ٹرمپ نےخود استقبال کیا۔ آرمی چیف بھی وزیراعظم کے ہمراہ وائٹ ہاؤس آئے۔ ڈونلڈ ٹرمپ نے مسئلہ کشمیر پر پاکستان اور بھارت میں ثالثی کی پیشکش کردی۔ افغانستان سے متعلق پاکستان کے کردار کی تعریف بھی کی۔

 

واشنگٹن میں وزیراعظم عمران خان کی وائٹ ہاؤس میں آمد ہوئی اور صدر ٹرمپ نے خود استقبال کیا۔ مصافحہ کرنے کے بعد دونوں لیڈر اندر چلے گئے۔ سب سے پہلے دونوں کے مابین ون آن ون ملاقات ہوئی۔ امریکی صدر نے وزیراعظم عمران خان کومسئلہ کشمیر میں ثالثی کی پیشکش بھی کی.

عمران خان سے ملاقات کے دوران امریکی صدر ٹرمپ کا کہنا تھا کہ افغانستان کی صورتحال پر تفصیلی بات ہوئی ہے۔ عمران خان پاکستان کے انتہائی مقبول وزیراعظم ہیں۔ امریکا پاک بھارت کشیدگی کو کم کرنے میں مدد کر سکتا ہے۔

صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا تھا کہ مودی بھی مسئلہ کشمیر کے معاملے پر مدد مانگ چکے ہیں۔ مسئلہ کشمیر کے حل کے لیے کوئی کردار ادا کرسکا تو خوشی ہوگی۔ اگر معاملات طے پا گئے تو پاکستان کی امداد بحال ہوسکتی ہے۔ پاک بھارت تعلقات اور تعاون میں اضافے پر کوئی کام نہیں ہوا۔

 

ٹرمپ کا کہنا تھا کہ پاکستان افغانستان میں ہماری بہت معاونت کررہا ہے۔ افغانستان میں اپنی فوج کی تعداد کم کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔ افغانستان میں امن کے لیے پاکستان کے کردار کے خواہاں ہیں۔ دورہ پاکستان کی دعوت دی گئی تو ضرور جاؤں گا۔ امید ہے ملاقات کے بعد دونوں ممالک کے تعلقات میں مزید بہتری آئےگی۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا مزید کہنا تھا کہ پاکستان کےعوام بہت مضبوط ہیں۔ پاکستان ایک عظیم ملک ہے۔ پاکستان میں میرے بہت سے دوست ہیں۔ مجھے پاکستان اور پاکستانی بہت پسند ہیں۔

      

اس موقع پر وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ پاکستان امریکا کے لیے انتہائی اہمیت کا حامل ملک ہے۔ دہشت گردی کے خلاف ہم نے مشترکہ جنگ لڑی ہے۔ نائن 11 کے بعد امریکا اور پاکستان دہشت گردی کے خلاف پارٹنر رہے۔ مسئلہ افغانستان کا کوئی فوجی حل نہیں ہے۔ افغان مسئلہ کا حل صرف اور صرف مذاکرات ہیں۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ ہمارا کردار طالبان اور افغان حکومت کو مذاکرات کی میز پر لانا ہے۔ ہم افغان امن معاہدے کے بہت قریب پہنچ چکے ہیں۔ ہم بھارت کے ساتھ بات چیت کے لیے تیار ہیں۔ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں ہم نے 70 ہزار جانیں قربان کیں جبکہ ہماری ملکی معیشت کو 150 ارب ڈالر سے زائد مالیت کا نقصان ہوا۔

احمد علی کیف  2 ماه پہلے

متعلقہ خبریں