کرسی جاتی ہے تو جائے کسی کو این آراو نہیں دوں گا: وزیراعظم

اسلام آباد(پبلک نیوز) کسی کو بھی این آر او نہیں ملے گا، وزیراعظم نے ببانگ دہل اعلان کر دیا، وزیراعظم کا کہنا ہے کہ جو کارکردگی دکھائے گا وہ کابینہ میں رہے گا، اسد عمر تحریک انصاف کا اثاثہ ہیں اور جلد وفاقی کابینہ میں واپس آئیں گے، صحافیوں سے گفتگو میں وزیراعظم نے مزید کن امورپر بات کی۔

 

کرسی جاتی ہے تو جائے کسی کو این آراو نہیں دوں گا، جو کارکردگی دکھائے گا وہ رہے گا، باقی وزراء کو گھر جانا پڑے گا۔ ملک میں صدارتی نظام نہیں آئے گا، اسد عمر تحریک انصاف کا قیمتی اثاثہ ہیں، وہ بہت جلد وفاقی کابینہ میں واپس آئیں گے،پیر کو قومی اسمبلی اجلاس میں شرکت کروں گا، وزیراعظم عمران خان نے صحافیوں سے گفتگو میں کئی ہیڈلائنز دیں۔

 

وزیراعظم عمران خان نے نے بتایا کہ آنے والے دنوں میں وفاقی کابینہ میں مزید ردوبدل ہوگا۔۔ جہاں جہاں سے بھی اچھے لوگ ملیں گے ان کا تقرر کروں گا،،،غیر منتخب افراد کی کابینہ میں شمولیت سے فرق نہیں پڑتا جہاں ماہر لوگ نہیں وہاں ٹیکنیکل ٹیم لا رہا ہوں۔ ٹیم میں تجربہ کار لوگوں کو استعمال کر رہا ہوں۔

 

وزیر اعظم نے کہا کہ اپوزیشن این آر او کے لیے ہم پر دباؤ ڈال رہی ہے لیکن کسی کو بھی ہرگز ہرگز این آر او نہیں دیا جائے گا۔ ہم عدالتوں اور نیب کی آزادی پر یقین رکھتے ہیں۔ایک اور سوال کا جواب دیتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ انٹیلی جنس رپورٹ کے مطابق پی ٹی ایم کے کچھ افراد کو باہر سے پیسے ملے۔وزیراعظم عمران خان نے واضح کیا کہ صدارتی نظام کے حوالے سے کوئی سوچ ہی موجود نہیں، انہوں نے اس حوالے سے اٹھنے والی تمام افواہوں کو مسترد کر دیا۔

عطاء سبحانی  2 ماه پہلے

متعلقہ خبریں