جتنا مرضی شور مچا لیں،عوام کے پیسوں کا حساب لیں گے: وزیر اعظم عمران خان

 

میانوالی (پبلک نیوز) وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ پہلے ان علاقوں پر توجہ دیں گے جو بہت پیچھے رہ گئے۔ بڑی دھمکیاں دیتے ہیں، میں 22 سال سے انتظار کررہا تھا۔ دعا کرتا تھا اللہ ایک موقع دے ملک کو نقصان پہنچانے والوں کو پکڑوں۔

 

میانوالی میں ہسپتال کی تعمیر کا سنگ بنیاد رکھنے کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ انسانیت کی بھلائی سے روح کو تسکین ہوتی ہے۔ صوفیاءکرام انسانیت کی خدمت کرنے آئے تھے۔ پہلے نمل میں11 پی ایچ ڈی تھے آج 22 ہیں۔ سب کہتے دیہات میں یونیورسٹی نہیں بن سکتی۔ نمل یونیورسٹی میں 97 فیصد طالبعلم سکالرشپ پر ہیں۔ نمل سے گریجوایٹ 92 فیصد طالبعلموں کو نوکری مل جاتی ہے۔

 

عمران خان کا کہنا تھا کہ پہلے ان علاقوں پر توجہ دیں گے جو بہت پیچھے رہ گئے۔ یہ گورنمنٹ کا پیسہ نہیں ہے، انیل مسرت کا ہے۔ آج گرفتاریوں پر بڑا شور مچا ہوا ہے۔ چین نے بہت تیزی سے ترقی کی ہے۔ انہوں نے ساڑھے 4 سو وزیروں کو کرپشن پر جیل میں ڈالا۔ ملک کے آگے نہ بڑھنے کی وجہ کرپشن ہے۔ اوورسیز پاکستانی ملک کے لیے بہت زیادہ تکلیف رکھتے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ بزنس میں کرپشن کی وجہ سے سرمایہ کار سرمایہ لگانے کے لیے تیار نہیں۔ 60 سال ملک پر 6 ہزار ارب قرضہ اور 10 سال میں 30 ہزار ارب چڑ گیا۔ میٹرو بسیں سالانہ 12ارب روپے کا نقصان کررہی ہیں۔ بڑی دھمکیاں دیتے ہیں، میں 22 سال سے انتظار کررہا تھا۔ دعا کرتا تھا اللہ ایک موقع دے ملک کو نقصان پہنچانے والوں کو پکڑوں۔ جو ملک قرضوں پر سود ادا کرتا رہے وہ آگے کیسے جاسکتا ہے۔

 

عمران خان کا کہنا تھا کہ ہمیشہ کمزور پکڑا گیا، طاقتور نہیں پکڑا گیا۔ بڑا شور مچ رہا ہے کہ جمہوریت کو خطرہ ہے۔ کہہ رہے ہیں کہ انتقامی کارروائی ہورہی ہے۔ کبھی قطری خط دیتے ہیں، کبھی کوئی فراڈ سامنے لے آتے ہیں۔ ان پر تمام کیسز پرانے ہیں، تمام ادارے آزاد ہیں۔ جتنا مرضی شور مچا لیں،عوام کے پیسوں کا حساب لیں گے۔ مجھ پر 32 تھانوں میں ایف آئی آر درج کرائی گئی۔ تھوڑا مشکل وقت ہے، لیکن جلد باہر نکل آئیں گے۔ سب سے پہلے عوام کی صحت، تعلیم پر توجہ دے رہے ہیں۔ وقت کے ساتھ ساتھ ترقیاتی فنڈز بڑھادیں گے۔

احمد علی کیف  1 ماه پہلے

متعلقہ خبریں