ملک کو فوج نہیں عوام اکٹھا رکھتے ہیں: وزیر اعظم

سوہاوہ (پبلک نیوز) وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ پاکستان کا نظریہ پیچھے چلا گیا تو مشرقی پاکستان علیحدہ ہوا۔ فلاحی ریاست عوام کو سہولیات دیتی ہے۔ کوئی بھی نظریہ کے بغیر لیڈر نہیں بن سکتا۔ فاٹا کے لوگوں کے حالات برے ہیں، ہمیں مدد کرنی چاہیے۔

 

جہلم کی تحصیل سوہاوہ میں القادر یونیورسٹی کے سنگ بنیاد رکھنے کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ پاکستان بننے کے پیچھے ایک تاریخ ہے۔ ہم پاکستان بننے کے مقصد سے بہت دور چلے گئے۔ ہمارا منشور بھی وہی ہے جو علامہ اقبال اور قائداعظم کا تھا۔ پاکستان نے ایک اسلامی اور فلاحی ریاست بننا تھا۔ ہم اسلامی رہے نہ فلاحی، صرف ایک ریاست بن گئے۔ ملک کو فوج نہیں عوام اکٹھا رکھ سکتی ہے۔ وہ قومیں ختم ہو جاتی ہیں جن کا نظریہ ختم ہوجاتا ہے۔

 

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ پاکستان کا نظریہ پیچھے چلا گیا تو مشرقی پاکستان علیحدہ ہوا۔ فلاحی ریاست عوام کو سہولیات دیتی ہے۔ کوئی بھی نظریہ کے بغیر لیڈر نہیں بن سکتا۔ فاٹا کے لوگوں کے حالات برے ہیں، ہمیں مدد کرنی چاہیے۔ انصاف نہ ملنے کی وجہ سے احساس محرومی پیدا ہوا۔ ہمیں اپنی قوم میں نئے لیڈر پیدا کرنا ہوں گے۔ تمام بڑے سائنسدان مسلمان تھے۔

 

عمران خان کا کہنا تھا کہ ہم نے مشرقی پاکستان کے لوگوں کے ساتھ انصاف نہیں کیا۔ چین ٹیکنالوجی میں ہم سے بہت آگے نکل گیا۔ پاکستان کے ٹوٹنے میں ہماری بھی غلطی تھی۔ روحانیت کو ایک سپر سائنس بنائیں گے۔ نائن الیون کے بعد اسلام پر حملے کیے گئے۔ ہم آنے والی نسلوں کو اسلام کا نظریہ بتائیں گے۔

 

قبل ازیں وفاقی وزیر سائنس و ٹیکنالوجی فواد چودھری کا تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ القادر یونیورسٹی شیخ عبدالقادر جیلانی کی نسبت سے بنائی جارہی ہے۔ وزیراعظم عمران خان ایک عالمی رہنما بن چکے ہیں۔ عمران خان انسانیت کی خدمت کرنے والے انسان ہیں۔ وزیراعظم عمران خان کا دل غریبوں کے ساتھ دھڑکتا ہے۔ وزیراعظم عمران خان پرامن انقلاب لے کر آئے۔

فوادچودھری کا کہنا تھا کہ تحریک انصاف متوسط طبقے کی پارٹی ہے۔ ماضی کے حکمرانوں کی وجہ سے مہنگائی کا بوجھ بڑھ رہا ہے۔ وزیراعظم عمران خان جلد معاشی بحران سے نکالیں گے۔ پاکستان میں 30 سال سے لوگ اقتدار سے چمٹے ہوئے تھے۔ عمران خان نے وہ کر دکھایا جو کوئی اور نہ کر سکا۔

حارث افضل  3 ماه پہلے

متعلقہ خبریں