لوگوں کے زخموں پر نمک چھڑک کر انہیں بھڑکانا درست نہیں: وزیر اعظم

اورکزئی (پبلک نیوز) وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ نوجوانوں کو سود کے بغیر قرض دیں گے۔ 10 سال میں قرضہ 6 ہزار سے 30 ہزار ارب تک پہنچ گیا۔ زرداری اور بلاول ہر وقت حکومت گرانے کی بات کرتے ہیں۔ ان عمران خان 2 سال رہ گیا تو سب کو جیل میں ڈال دے گا۔

 

جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ اورکزئی اور کلایہ کے لوگوں کا دل سے شکر گزار ہوں۔ 27 سال پہلے اس علاقے میں آیا تھا۔ اس وقت کے حکمران کو قبائلی علاقے کی روایات کا علم نہیں تھا۔ پی ٹی ایم کی بات ٹھیک ہے لیکن ملک کے لیے لہجہ ٹھیک نہیں۔ لوگوں کے دکھ درد پر نمک چھڑک کر بھڑکایا جاتا ہے۔ فوج کے خلاف بات کرنے اور نعرے لگانے سے نقصان ہو گا فائدہ نہیں۔ سب سے بڑا چیلنج نوجوانوں کو نوکریاں دینی ہیں۔

 

وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ پی ٹی ایم والے وہی بات کر رہے ہیں جو میں 15 سال سے میں کر رہا ہوں۔ لوگوں کو بھڑکایا جاتا ہے لیکن مسائل کا حل پیش نہیں کیا جاتا۔ نوجوانوں کو سود کے بغیر قرض دیں گے۔ پی ٹی ایم بھڑکا نے کی بجائے لوگوں کی مدد کرے۔ مدرسوں میں پڑھنے والے ہمارے اپنے بچے ہیں۔ 10 سال میں قرضہ 6 ہزار سے 30 ہزار ارب تک پہنچ گیا۔ منی لانڈرنگ کی وجہ سے ملک زیادہ مقروض ہوا۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ ہم قرضوں پر روزانہ 6 ارب روپے سود دیتے ہیں۔ اگر پیسہ ہوتا تو پسماندہ علاقوں پر خرچ کرتے۔ مشرف سے این آر او کے بعد ملک مزید مقروض ہوا۔ مخالفین پہلے دن سے حکومت ناکام ہونے کی بات کر رہے ہیں۔ زرداری اور بلاول ہر وقت حکومت گرانے کی بات کرتے ہیں۔ ان عمران خان 2 سال رہ گیا تو سب کو جیل میں ڈال دے گا۔ کیپٹن کا صرف ایک مقصد ہوتا ہے کہ اس کی ٹیم جیتے۔ میرامقصد کمزور لوگوں کو اوپر اٹھانا ہے۔

 

ان کا مزید کہنا تھا کہ کئی دفعہ بیٹنگ آرڈر تبدیل کرنا پڑتا ہے۔ کئی بار کپتان کو نئے کھلاڑی بھی لانے پڑتے ہیں۔ آئندہ بھی ٹیم میں تبدیلی کی ضرورت پڑی تو کروں گا۔ اللہ سے دعا ہے افغانستان میں امن آئے۔ افغانیوں نے 40 سال سے جنگ ہی دیکھی ہے۔ افغانستان میں کینسر کے لیے اسپتال بناؤں گا۔ قبائلی علاقے میں امرکا کے کہنے پر فوج بھیجنے کے مخالف تھا۔ قبائلی علاقے میں ملٹری آپریشن سے تباہی مچی۔ پاک فوج کا کوئی قصور نہیں تھا، قصور حکومت وقت کا تھا۔ قصور اس حکمران کا تھا جس نے امریکا کے کہنے پر قبائلی علاقے میں فوج بھیجی۔ قبائلی علاقے کے لوگوں کو نقل مکانی کرنا پڑی۔ یقین دلانے آیا ہوں آپ کی قربانیاں رائیگاں نہیں جائیں گی۔ تکلیف سے گزرنے والوں کو فوج کے خلاف اکسانا ٹھیک نہیں۔ یہ پہلی حکومت نے جس نے سیاحت کو فروغ دیا ہے۔ سیاحت کے لیے سہولیات پیدا کرنی ہیں۔

حارث افضل  4 ماه پہلے

متعلقہ خبریں