حکومت نے کشمیر کے مقدمے کو مضبوطی سے نہیں لڑا، احسن اقبال

 

اسلام آباد (پبلک نیوز) رہنما (ن) لیگ احسن اقبال نے کہا ہے کہ حکومت نے کشمیر کے مقدمے کو مضبوطی سے نہیں لڑا، حکومت کو اپوزیشن سے انتقامی کارروائیوں سے فرصت نہیں ملی کہ کشمیر کا مقدمہ لڑتی، وزیر خارجہ کو باہر جا کر بیک ڈور لابنگ کرنی چاہئے تھی۔ اسلامی سربراہی کانفرنس (او ائی سی) کا پاکستان میں غیر معمولی اجلاس بلایا جائے۔

 

شہر اقتدار میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ ملک کو دہشت گردوں سے پاک کرنا ہے۔ مودی نے ایسا قدم اٹھایا جس کی 70 برسوں میں مثال نہیں ملتی۔ سوال یہ ہے کہ مودی نے اب پاکستان کو اتنا کمزور کیوں سمجھا۔ بھارتی فوج کی فائرنگ سے پاک فوج کے جوان شہید ہوئے۔ پاک فوج کے شہید جوانوں کو خراج عقیدت پیش کرتے ہیں۔ مودی پہلے بھی وزیراعظم تھا لیکن ایسا قدم اٹھانے کی جرات نہیں تھی۔

رہنما (ن) لیگ احسن اقبال کا کہنا تھا کہ وزیر خارجہ کو باہر جا کر بیک ڈور لابنگ کرنی چاہئے تھی۔ پاکستان نے مقبوضہ کشمیر کا مقدمہ مضبوطی سے نہیں لڑا۔ بھارت کی ایسی حرکت سے خطے کا امن تباہ ہو سکتا ہے۔ ہزاروں کشمیریوں کو پلٹ گنز سے نشانہ بنایا گیا۔ حکومت کی تمام تر توجہ اپوزیشن کی گرفتاریوں پر ہے۔ صدر ٹرمپ کے سامنے کشمیر کا مقدمہ مضبوطی سے رکھنا چاہئے تھا۔ پاکستان کے اتحاد کو بھارت نہیں، اپنی حکومت نے توڑا۔

 

انھوں نے مطالبہ کیا کہ جنرل اسمبلی کے اجلاس میں پاکستان کے وفد کی سربراہی آزاد کشمیر کے وزیراعظم کو دی جائے۔ آزاد کشمیر کے وزیراعظم کشمیریوں کا مقدمہ دنیا کے سامنے رکھیں۔ اس کے علاوہ اسلامی سربراہی کانفرنس (او ائی سی) کا پاکستان میں غیر معمولی اجلاس بلایا جائے۔

احمد علی کیف  1 ماه پہلے

متعلقہ خبریں