مسلم لیگ ن "مائنس عمران خان" فارمولہ پر ڈٹ گئی

پبلک نیوز: وزیراعظم عمران خان کے خلاف ن لیگ نے تحریک کا اعلان کر دیا۔ مائنس عمران فارمولے کا شوشہ چھوڑ دیا۔ نواز شریف نے جیل میں بیٹھ کر حکومت گرانے کا منصوبہ بنا لیا۔ لیگی رہنماؤں نے منصوبہ پر ہوم ورک شروع کر دیا۔ آل پارٹیز کانفرنس میں منصوبہ باقی اپوزیشن کے گوش گزار کیا جائے گا۔

مسلم لیگ ن 'مائنس عمران خان' فارمولے پر ڈٹ گئی۔ سابق وزیراعظم نواز شریف سے سنٹرل جیل کوٹ لکھپت میں ملاقات کے دوران نواز شریف کو عمران خان کو ہٹانے کے حوالے سے پارٹی میں پائی جانے والی سوچ پر بریفنگ دی گئی۔

ن لیگی رہنماؤں نے نواز شریف کو بتایا کہ عمران خان  نے ملک کو معاشی طور پر دیوالیہ کر دیا ہے، پہلے معیشت تباہ ہوئی اب اداروں کی ساکھ کو بھی خطرہ پیدا ہو گیا ہے۔

ذرائع کے مطابق  سابق وزیراعظم نواز شریف نے عید الفطر کے بعد متحدہ اپوزیشن کی آل پارٹیز کانفرنس میں مائنس عمران فارمولہ کی متفقہ منظوری کے لئے تجویز پیش کرنے کی ہدایت کی۔

نواز شریف نے  ملاقات کے لیے آنے والے پارٹی رہنماؤں سے مکالمہ میں کہا کہ اگر میں قوم کی جانب سے کفارہ ادا کررہا ہوں تو پارٹی کے ایم پی ایز اور ایم این ایز کو کیا مسئلہ ہے؟

ذرائع نے بتایا کہ معاشی حالات اور اعلیٰ عدلیہ کے معزز ججوں کے خلاف ریفرنسز دائر کیے جانے پر نواز شریف اظہار تشویش کیا اور کہا حکومت کی طرف سے ججز کے خلاف ریفرنس دائر کرنا سراسر نا انصانی ہے۔ جمہوریت پسند ججز کو چن چن کر نشانہ بنایا جارہا ہے۔

نواز شریف نے کہا وہ عدلیہ کیساتھ پہلے بھی کھڑے  تھے اور آج بھی کھڑے ہیں۔ پارٹی رہنماؤں کو ہدایت کی کہ انکی جانب سے قومی اسمبلی اور سینیٹ میں عدلیہ کے حق میں بھرپور آواز اٹھائیں۔

انہوں نے کہا کہ موجودہ عدلیہ کے معزز ججوں کے خلاف حکومت نے ناجائز ریفرنس دائر کیے ہیں۔ حق سچ کی بات کرنے والے اور ملکی اداروں کو اپنی اپنی حدود میں رہنے کے فیصلے دینے والے ججز موجودہ حکومت کو قبول نہیں ہیں۔

نواز شریف نے سوال اٹھایا کہ یہ ہے نیا پاکستان؟ اس ملک کی عوام دیکھ لے کہ ‏ آئین اور قانون کے مطابق فیصلے کرنے والے ججز کو ایک ایک کر کے ہٹایا جا رہا ہے۔

نواز شریف نے گزشتہ روز اسلام آباد میں پیپلز پارٹی کے کارکنوں پر پولیس تشدد  کو قابل مذمت  قرار دیتے ہوئے کہا کہ یہ ناقابل قبول ہے۔ کسی جمہوری حکومت سے نہتے، پرامن سیاسی کارکنوں پر بیہمانہ تشدد کی امید نہیں کی جا سکتی۔

احمد علی کیف  2 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں