سانحہ ساہیوال میں بڑا ظلم ہوا، نواز شریف

لاہور (پبلک نیوز) سابق وزیر اعظم اور پاکستان مسلم لیگ ن کے تاحیات قائد میاں محمد نواز شریف نے کہا ہے کہ وہ گھبرانے والے نہیں، حوصلے بلند ہیں۔ سانحہ ساہیوال میں بڑا ظلم ہوا۔

کوٹ لکھپت جیل میں نوازشریف سے ملاقات کا دن گزرا۔ نوازشریف کی والدہ، بیٹی مریم نواز اور لیگی رہنماؤں نے جیل میں نوازشریف سے ملاقات کی۔ نوازشریف نے کہا کہ جیل میں بھی حوصلے بلند ہیں۔ سانحہ ساہیوال میں بڑا ظلم ہوا۔ لیگی رہنماؤں نے نوازشریف کوطبی سہولیات نہ دینےکا شکوہ کیا۔

کوٹ لکھپت جیل میں قید نواز شریف سے والدہ، بیٹی مریم نواز، حمزہ شہباز سمیت خاندان کے دیگر افراد نے ملاقات کی۔ سینیٹر پرویز رشید، طلال چودھری، طارق فضل، خرم دستگیر سمیت دیگرپارٹی رہنماؤں نے بھی سابق وزیراعظم سے ملاقات کی۔

جیل میں علاج معالجہ کی مناسب سہولیات نہیں دی جا رہیں، سابق وزیر اعظم کا شکوہ

لیگی رہنماؤں سے گفتگو کرتے ہوئے نوازشریف نے کہا کہ وہ گھبرانے والے نہیں، حوصلے بلند ہیں۔ سابق وزیراعظم نے شکوہ کیا کہ انہیں جیل میں علاج معالجہ کی مناسب سہولیات نہیں دی جا رہیں۔ پی آئی سی پہنچاتے ہی کہا گیا کہ ہسپتال میں داخل نہیں کرنا۔ نوازشریف نے کہا عوام کی عدالت میں سرخرو ہوں گے۔ سابق وزیراعظم نے سانحہ ساہیوال کو بڑا ظلم اور منی بجٹ کو الفاظ کا گورکھ دھندا قرار دیا۔

ملاقات کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے پرویز رشید نے مطالبہ کیا کہ ذاتی معالج کو نوازشریف تک رسائی دی جائے۔ لیگی رہنما طلال چودھری نے دھمکی دی کہ ہماری خاموشی کو کمزوری نہ سمجھا جائے۔ حکومت ہوش کے ناخن لے۔ لیگی رہنماؤں نے مطالبہ کیا کہ نوازشریف کو بہترین طبی سہولتیں دی جائیں۔ ان کو کچھ ہوا تو ذمہ دار حکومت ہو گی۔

ہماری خاموشی کو کمزوری نہ سمجھا جائے، حکومت ہوش کے ناخن لے، طلال چودھری

دوسری جانب نواز شریف کی ناساز طبیعت کے معاملے پر محکمہ داخلہ پنجاب نے طبی معائنہ کے لیے نیا میڈیکل بورڈ بنانے کا فیصلہ کر لیا ہے۔ ذرائع کے مطابق محکمہ صحت کو میڈیکل بورڈ کے متعلق مراسلہ ارسال کر دیا گیا ہے۔ میڈیکل بورڈ میں ماہرین امراضِ قلب اور دیگر طبی ماہرین شامل ہوں گے۔ نئے میڈیکل بورڈ کا فیصلہ نواز شریف کی صحت کے پیش نظر کیا گیا ہے۔

احمد علی کیف  8 ماه پہلے

متعلقہ خبریں