کراچی: کمسن بچی کو سمندر میں ڈبو کر قتل کیس میں تفتیش کا دائرہ کار وسیع

کراچی(پبلک نیوز) معاشرے کی ستائی اور گھریلو حالات سے دلبرداشتہ ماں کے ہاتھوں کمسن بچی کو سمندر میں ڈبو کر قتل کرنے کا کیس، پولیس نے سوال نامہ تیار کر لیا۔ ماں سمیت شوہر اور والد کو بھی قتل کیس میں شامل تفتیش کرنے کا فیصلہ کر لیا گیا۔

 

کلفٹن میں کمسن بچی کو سمندر میں ڈبو کر قتل کرنے کا معاملہ، پولیس نے تفتیش کا دائرہ کار وسیع کر دیا۔ گرفتار ملزمہ کے بیان کہ اپنے گھر ماں اور بیٹی کو رکھنے کو تیار نہ تھا، والدین نے بھی ماں بیٹی کو اپنے گھر رکھنے سے انکار کیا کو مدنظر رکھتے ہوئے شوہر اور والد کو بھی قتل کیس میں شامل تفتیش کرنے کا فیصلہ کر لیا گیا۔

متعلقہ خبر:کلفٹن کراچی میں ماں نے اڈھائی سالہ بچی کو سمندر میں ڈبو کر قتل کر دیا

پولیس نے سوال نامہ تیار کر لیا، سوال نامے میں سوالات کیے گئے کہ مطابق شوہر بیوی کو تحفظ کیوں نہ فراہم کرسکا ؟ تعلیم یافتہ بیوی کو نوکری کی اجازت نہ دینا کیا صحیح اقدام تھا؟ شوہر نے بیوی اور بچی کو پُرسکون زندگی گزارنے کا گھریلو ماحول کیوں نہیں دیا؟ ماں اور بچی کو خرچہ پانی میں کنجوسی یا کوئی اور وجہ؟

 

پولیس ذرائع کے مطابق بی بی اے پاس ملزمہ کو اس کا شوہر ملازمت بھی نہیں کرنے دیتا تھا، بچی کی موت کے بعد تھانے پہنچ کر بیوی پر تشدد کیا کہ یہ کیوں نہیں مری، ملزمہ سے پولیس ریمانڈ پر تفتیش تاحال جاری ہے۔ پولیس نے لاش بچی کے تایا کے حوالے کردی ہے۔

عطاء سبحانی  2 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں