جج ارشد ملک ویڈیو اسکینڈل کے بعد ناصر جنجوعہ پر شریک ملزم خرم یوسف کے اغواء کا الزام

 

اسلام آباد (پبلک نیوز) سابق وزیراعظم نواز شریف کے قریبی ساتھی اور جج ویڈیو اسکینڈل میں نامزد ملزم ناصر جنجوعہ کے گھر پر چھاپہ، جج ارشد ملک ویڈیو اسکینڈل کے بعد ناصر جنجوعہ پر شریک ملزم خرم یوسف کے اغواء کا الزام۔

 

تفصیلات کے مطابق تھانہ لوہی بھیر اور تھانہ کوہسار کے اہلکاروں نے ناصر جنجوعہ کے سیکٹر ایف سکس ٹو مارگلہ روڈ کے گھر پر چھاپہ مارا۔ ناصر جنجوعہ فیملی سمیت گھر سے غائب تھے۔ ملازمین کا اپنے مؤقف میں کہنا تھا کہ ناصر جنجوعہ گزشتہ 5، 6 دن سے گھر نہیں آئے۔

 

خیال رہے کہ ویڈیو اسکینڈل کیس کے شریک ملزم کے خلاف اپنے ساتھی کو اغواء کرانے کا الزام ہے۔ مڈ جیک کے مالک، جج ویڈیو اسکینڈل میں نامزد ملزم ناصر جنجوعہ پر شریک ملزم خرم یوسف کو فیملی سمیت اغواء کا مقدمہ درج ہے۔ ملزم کے خلاف تھانہ لوہی بھیر میں راشد محمود کی مدعیت میں مقدمہ درج کیا گیا۔ مقدمہ دفعہ 365 ت پ کے تحت درج کیا گیا۔

 

مدعی راشد محمود نے الزام  عائد کیا ہے کہ میرا بہنوئی خرم کچھ عرصے ایک کیس کو لے کر پریشان تھا اور ناصر جنجوعہ سے مسلسل رابطہ میں تھا۔ خرم یوسف اور اس کی فیملی کے اغواء میں ناصر جنجوعہ کا ہاتھ ہے۔

 

ایف آئی آر کے مطابق بازیابی کے لیے پولیس سے جلد کارروائی کرنے کی استدعا کی گئی ہے۔

 

یاد رہے کہ ویڈیوسکینڈل کے شریک ملزمان کو جوڈیشل مجسٹریٹ ثاقب جواد نے 7 ستمبر کو ڈسچارج کیا تھا۔ ڈسچارج کیے جانے والوں میں ناصر جنجوعہ اور خرم شہزاد یوسف سمیت غلام جیلانی شامل تھے۔

احمد علی کیف  1 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں