کرتار پور راہداری منصوبے کے افتتاح سے متعلق تیاریاں مکمل کر لی گئیں

اسلام آباد(پبلک نیوز) دنیا بھر میں سکھ مذہب کے پیروکاروں کیلئے خوشی کی خبر، پاکستان اور بھارت کے 23 اکتوبر کو کرتار پور راہداری کھولنے کے لئے سمجھوتے پر باظابطہ طور پر دستخط کرنے کا امکان روشن ہو گیا۔ دونوں جانب سے سمجھوتے کے مسودے پر اتفاق کر لیا گیا ہے۔

 

پاکستان اور بھارت نے کرتار پور راہداری منصوبے کے افتتاح سے متعلق تیاریاں مکمل کر لیں۔ کرتار پور راہداری منصوبے کا افتتاح نو نومبر کو ہو رہا ہے۔ بھارت نے یاتریوں سے متعلق آزمائشی اعداد وشمار پاکستان کو فراہم کر دیئے۔ بھارت بیس ڈالر فی یاتری سروس چارجز کی تجویز پہلے ہی مان چکا ہے۔ یہ رقم کرتارپور میں سڑکوں کی تعمیر و مرمت سمیت ٹرانسپورٹ کی دیگر اخراجات پر خرچ کی جائے گی۔ ابتدا میں بھارت ہٹ دھرمی کا مظاہرہ کرتے ہوئے سروس چارجز دینے سے گریز کر رہا تھا۔

 

بھارت نے 23 اکتوبر کو منصوبے سے متعلق معاہدے پر باقاعدہ دستخط کرنے کی بھی حامی بھر لی ہے۔ پاکستان کی طرف سے ڈی جی جنوبی ایشیا ڈاکٹر محمد فیصل معاہدے پر دستخط کریں گے۔ پاکستانی وزارت خارجہ کے ذرائع کے مطابق معاہدے پر دستخط میں ایک دو روز کی تاخیر ہو سکتی ہے۔ بھارتی وزارت داخلہ نے کرتار پور سمجھوتے سے متعلق بیان جاری کرتے ہوئے بدھ کے روز سمجھوتے پر دستخط کی تصدیق کی ہے۔

عطاء سبحانی  3 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں