صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے سی پیک اتھارٹی آرڈیننس پر دستخط کر دیئے

اسلام آباد(پبلک نیوز) سی پیک اتھارٹی آرڈیننس پر دستخط کر دیئے گئے، جس کے تحت ‏وزیراعظم عمران خان 4 سال کے لیے اتھارٹی کے چیئر پرسن ہوں گے۔ اتھارٹی کے ارکان کی تعداد دس ہو گی، جن کا تعین وزیراعظم خود کریں گے۔ اتھارٹی سی پیک سے متعلق کوئی بھی تفصیلات طلب کرنے کی مجاز ہو گی۔

 

صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے سی پیک اتھارٹی آرڈیننس پر دستخط کر دیئے۔ صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی کے دستخط کے بعد سی پیک اتھارٹی آرڈیننس نافذ العمل ہو گیا ہے۔ سی پیک اتھارٹی آرڈیننس قومی اسمبلی اور سینیٹ اجلاس نہ ہونے پر لایا گیا ہے۔ آرڈیننس کے تحت ‏‏سی پیک اتھارٹی کا اطلاق پورے پاکستان میں ہو گا، اتھارٹی 10 ارکان پر مشتمل ہو گی۔ سی پیک ‏اتھارٹی کا چیف ایگزیکٹو 20 گریڈ کا سرکاری افسر ہو گا، جبکہ وزیراعظم عمران خان 4 سال کے لیے اتھارٹی کے چیئرپرسن ہوں گے۔

 

‏وزیراعظم ہی اتھارٹی کے ایگزیکٹو ڈائریکٹرز اور ارکان کی تعیناتی کریں گے، ‏سی پیک سے متعلق کوئی بھی فیصلہ اتھارٹی کے اکثریتی ارکان کی منظوری سے ہو گا۔ اتھارٹی پاکستان اور چین کے مابین مختلف شعبوں میں تعاون کا تعین کرے گی اور ہر سال اپنی فنانشل رپورٹ وزیراعظم کو جمع کروائے گی۔ سی پیک اتھارٹی وزارت منصوبہ بندی کے ساتھ مل کر کام کرے گی۔ اتھارٹی جوائنٹ کوآپریشن کمیٹی اور جوائنٹ ورکنگ گروپ کے درمیان موثر رابطےکا کردار بھی ادا کرے گی۔ اتھارٹی، رولز کے مطابق سی پیک بزنس کونسل بھی قائم کرسکے گی۔

عطاء سبحانی  1 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں