جلد شہباز شریف کی منی لانڈرنگ کے متعلق نئے انکشافات کروں گا، شہزاداکبر

 

لاہور(پبلک نیوز) معاون خصوصی احتساب شہزاد اکبر نے کہا ہے کہ شہبازشریف نے میری باتوں کا جواب نہیں دیا۔ شہبازشریف پہلے کی طرح آج بھی ڈرامے کرتے رہے۔ آئندہ ہفتے شہباز شریف کی منی لانڈرنگ کے متعلق نئے انکشافات کروں گا۔ ہمارامقصد یہ نہیں یہ جیلوں میں رہیں اورہم ان پر پیسا خرچ کریں

 

معاون خصوصی احتساب شہزاد اکبر کا میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ شہبازشریف کی پریس کانفرنس جذبات سے بھری تقریرتھی۔ شہباز شریف نے میری باتوں کا جواب نہیں دیا۔ شہباز شریف پہلے کی طرح آج بھی ڈرامے کرتے رہے۔ شہبازشریف نے اصل حقائق چھپانے کی کوشش کی۔ جن ادائیگیوں کی بات ہو رہی ہے وہ 2005 کی نہیں ہیں۔

شہزاد اکبر کا کہنا تھا کہ ہم 3 ادائیگیوں کا پوچھ رہے ہیں جوایرا سے ہوئیں۔ پہلی ادائیگی 2 کروڑ روپے کی 6 ستمبر 2012 کو ہوئی۔ دوسری ادائیگی مارچ 2013 میں ایک کروڑ سے زائد کی ہوئی۔ ایرا کے فنڈز سے علی عمران کو 6 کروڑ کی ادائیگی کی گئی۔ اصل زلزلہ 2005 میں نہیں آپ کے آنے سے آیا۔

 

معاون خصوصی برائے احتساب کا کہنا تھا کہ نوید اکرام نے 2013 میں 80 کنال اراضی خریدی۔ شہباز شریف خاندان کو ٹی ٹی کے ذریعے کروڑوں کی رقوم بھیجی گئی۔ شہباز شریف خاندان کی چوری پکڑی گئی جس کا جواب نہیں دیا گیا۔ آئندہ ہفتے شہباز شریف کی منی لانڈرنگ کے متعلق نئے انکشافات کروں گا۔

 

شہزاد اکبر کا کہنا تھا کہ حمزہ شہباز کا گھر بھی ٹی ٹی کی رقم سے خریدا گیا۔ برطانیہ سے حوالگی کا معاہدہ نہیں اس لیے مشکلات ہیں۔ قانون کے مطابق جائیداد ضبط ہوگی اور ریکوری کی جائے گی۔ نوید اکرام پلی بارگین کرچکا ہے اور علی عمران مفرور ہے۔

 

ان کا مزید کہنا تھا کہ ہمارامقصد یہ نہیں یہ جیلوں میں رہیں اورہم ان پر پیسا خرچ کریں۔ علی عمران کی تمام جائیداد کو نیلام کیا جائے گا۔ نویداکرام، علی عمران اور فرخ شاہ کا گٹھ جوڑ تھا۔ منی لانڈرنگ سے نصرت شہباز نے ڈونگا گلی میں گھر خریدا۔

احمد علی کیف  4 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں