پہلے خطاب میں کہا تھا گھبرانا نہیں، پھر بھی کچھ لوگ گھبرا گئے تھے: وزیراعظم عمران خان

 

اسلام آباد (پبلک نیوز) وزیراعظم پاکستان عمران خان نے کہا ہے کہ ڈیجیٹل پاکستان نوجوانوں کے لیے انتہائی ضروری ہے۔ ڈیجیٹل پاکستان پر ہمیں بہت پہلے کام کر لینا چاہئے تھا۔ حکومت میں آئے توبہت بڑا کرنٹ خساراملا۔ کوئی بھی ایسا ادارہ نہیں تھا جو خسارے میں نہ ہو۔ گزشتہ حکومت نے روپے کی قدر کو مصنوعی طور پر مستحکم رکھا۔

ڈیجیٹل پاکستان منصوبہ کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ اپنی عمرکا زیادہ تر حصہ بیرون ملک گزارا۔ میں بھی ایک قسم کا اوورسیز پاکستانی رہا ہوں۔ سمندر پار پاکستانیوں کی مثبت رحجانات سے بخوبی واقف ہوں۔ زندگی کامقصدطے کرنے کے لیے اپنے آپ کافیصلہ کرناہوتاہے۔

انھوں نے کہا کہ جو لوگ غلط فیصلہ کرتے ہیں ناکام ہو جاتے ہیں۔ آسان راستہ ڈھونڈنے والوں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ دنیا میں لوگ مشکل فیصلے کر کے کامیاب ہوجاتے ہیں۔ جو درست مقصد رکھتے ہیں کامیاب ہو جاتے ہیں۔ زندگی کا ہر روز آگے بڑھنے کا زینہ ہے۔

وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ 5سال بعد بچے بچے کو پتہ ہو گا کرنٹ خسارہ کیا ہوتا ہے۔ غیرجانبدارعالمی مالیاتی ادارے نے ملکی معیشت کومستحکم قراردیاہے۔ ہماری پوری توجہ ڈیجیٹل پاکستان پراجیکٹ پرہو گی۔ خواتین ڈیجیٹل پاکستان میں مکمل طور پر حصہ لے سکتی ہیں۔

تقریب سے خطاب میں انھوں نے واضح کیا کہ میں نے اپنے پہلے خطاب میں قوم سے کہا تھا آپ نے گھبرانا نہیں ہے لیکن کچھ لوگ واقعی گھبرا گئے تھے۔ ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ پاکستان اس وقت عالم دنیا میں امن کا گہوارہ بن چکا ہے۔

احمد علی کیف  1 ماه پہلے

متعلقہ خبریں