ضمنی انتخابات کیلئے پولنگ کا وقت ختم، ووٹوں کی گنتی جاری

اسلام آباد(پبلک نیوز) ملک بھر کے 35 قومی و صوبائی اسمبلی کے حلقوں میں ضمنی انتخابات کا عمل جاری ہے، اسلام آباد میں بھی قومی اسمبلی کے حلقے 53 میں ہونے والے ضمنی انتخاب میں ووٹنگ کا عمل جاری ہے۔ وزیراعظم عمران خان نے این اے 53کے پولنگ سٹیشن میں ووٹ کاسٹ کر دیا۔

 

اسلام آباد کے حلقہ این اے 53 میں صبح آٹھ بجے سے ضمنی الیکشن کی ووٹنگ کا عمل جاری ہے، اس حلقے میں جنرل الیکشن میں وزیراعظم عمران خان نے سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کو شکست دی تھی، اور اس بار تحریک انصاف کے امیدوارعلی نواز اعوان جبکہ ن لیگ کی جانب سے راجہ وقار ممتاز میدان میں اترے ہیں ۔

وزیراعظم عمران خان نے این اے 53کے پولنگ سٹیشن میں ووٹ کاسٹ کر دیا، وہ پروٹوکول کے ساتھ پولنگ سٹیشن پہنچےجہاں پر سکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے تھے۔ انتظامیہ کی جانب سے 315 پولنگ اسٹیشنز کے لیے سیکورٹی کے تین ہزار اہلکار تعینات کیے گئے ہیں۔ این اے 53 میں کل ووٹرز کی تعداد 3 لاکھ 13 ہزار 1 سو 41 ہے۔ مرد ووٹرز کی تعداد 1 لاکھ 66 ہزار 3 سو 26 ہے جبکہ خواتین ووٹرز کی تعداد 1 لاکھ 46 ہزار 8 سو 15 ہے، حلقے کے کل 315 پولنگ اسٹیشنز میں سے 6 حساس ترین جبکہ 30 پولنگ اسٹیشنز حساس قرار دئیے گئے ہیں۔

 

انتظامیہ کی جانب سے امن وامان کی صورتحال کو یقینی بنانے کے لیے پولیس کے 3 ہزار اہلکار تعینات کیے گئے ہیں جبکہ ‏پولنگ اسٹیشنز کی مانیٹرنگ کے لیے 3 کنٹرول رومز بنائے گئے ہیں، حلقے کو 4 زونز اور 6 سیکٹرز میں تقسیم کیا گیا ہے، ہر زون کی نگرانی ایس پیز کریں گے جبکہ تمام سیکٹرز کی نگرانی ڈی ایس پیز کریں گے۔

 

دوسری جانب لاہور کے حلقہ این اے 124 کی اہم نشت جو 28 سال سے مسلم لیگ ن جیتی آئی ہے اس بار فتح اپنے نام کر پائے گی یا پھر پی ٹی آئی شکت سے دو چار کر ے گی۔  اس حلقہ این اے 124 میں مسلم لیگ ن کے امیدوار سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی اور پی ٹی آئی سے غلام محی الدین دیوان مدمقابل ہیں۔ خواتین اور مرد ووٹرز کی بڑی تعداد اپنا حق رائے دہی استعمال کر رہی، مسلم لیگ ن اور پی ٹی آئی کی جانب سے پولنگ بوتھ کے باہر کیمپ بھی لگائے گئے ہیں، جبکہ مسلم لیگ ن کی جانب سے ووٹرز کو گھروں سے پولنگ اسٹیشن پر لانے کے لیے چنگ چی رکشہ پر پک ایڈا ڈراپ کی سہولت بھی دی جا رہی ہے۔

 

اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے صوابی میں ووٹ کاسٹ کیا، ان کا کہنا ہیں مہنگائی عارضی بھونچال ہے اور پروپیگنڈا زیادہ کیا جارہا ہے۔ اسپیکر پنجاب اسمبلی چودھری پرویز الہٰی اور چودھری شجاعت حسین سے گجرات میں ووٹ ڈالا، این اے 69سے مونس الہٰی میدان میں ہیں۔

 

اورسیز ووٹرز کے لیے بنائی گئی ویب سائیٹ پر ہیکرز کی جانب سے حملہ کی کوشش کی گئی۔ ذرائع کے مطابق ہیکرز کی جانب سے بیک وقت ویب سائٹ پر 10 ہزار سے زائد حملے کیے گئے۔ نادرا حکام نے اوورسیز ویب سائٹ پر حملوں کو ناکام بنا دیا۔ سات گھنٹے پولنگ کے دوران ایک مرتبہ بھی ویب سائیٹ ڈاؤن نہیں ہوئی۔ ڈی جی آئی ٹی خضر عزیز کے مطابق لوڈ کے باعث ویب سائٹ سست ہونا معمول کی بات ہے۔ الیکشن کمیشن کی ویب سائٹ کامیابی سے چل رہی ہے۔

 

ضمنی انتخابات میں لاہور کے حلقے این اے 124 میں مسلم لیگ (ن) کے امیدوار شاہد خاقان عباسی کو ووٹ ڈالنے کے لیے سابق وزیراعظم نوازشریف حلقے میں قائم پولنگ اسٹیشن گورنمنٹ کالج ٹیکنالوجی پہنچے اور اس موقع پر شاہد خاقان عباسی بھی ان کے ہمراہ تھے۔ نوازشریف سخت سیکیورٹی میں پولنگ بوتھ گئے جہاں انہوں نے اپنا نام دیکھا، پولنگ ایجنٹ نے سابق وزیراعظم سے ووٹ کاسٹ کرنے کا کہا تو ان سے شناختی کارڈ بھی مانگا گیا۔ سابق وزیراعظم نے اپنے پی ایس او سے شناختی کارڈ سے متعلق پوچھا جس پر انہیں بتایا گیا کہ ان کا شناختی کارڈ پرائیوٹ سیکریٹری کے پاس ہے جو اس وقت یہاں موجود نہیں ہیں۔ شناختی کارڈ نہ ہونے کے باعث میاں نوازشریف اپنا ووٹ کاسٹ نہ کرسکے اور انتظار کرنے کے بعد واپس چلے گئے۔

عطاء سبحانی  1 ماه پہلے

متعلقہ خبریں