کوئی ادارہ ٹیکس دینے والوں کو تنگ نہیں کریگا، وزیراعظم کا وعدہ

 

اسلام آباد (پبلک نیوز) وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ پاکستانی دنیا میں سب سے کم ٹیکس دیتے ہیں۔ قوموں کی زندگی میں مشکل وقت آتےرہتے ہیں۔ آدھا ٹیکس قرضوں کی سود ادائیگی میں چلا جاتا ہے۔ لوگ خوفزدہ ہیں کہ ان کے ٹیکس کا پیسہ چوری ہو جائے گا۔ عوام کے ٹیکس کا پیسہ عوام پر ہی لگے گا۔ ہماری حکومت نے اپنے اخراجات کم کیے۔

 

نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ وزیروں نے 10فیصد تنخواہوں کو کم کیا۔ پاکستان کی افواج نے پہلی بار اپنے اخراجات کم کیے۔ ہیلپ لائن بنا رہے ہیں تنگ کرنے والوں کے خلاف شکایت کی جا سکتی ہے۔ کسی ادارے کو ٹیکس دینے والوں کو تنگ نہیں کرنے دیں گے۔ اگرٹیکس نہیں لیں گے تو پھر ملک کیسے چلے گا۔

 

انھوں نے کہا کہ ایف بی آر میں ہر قسم کی ریفارمز لائیں گے۔ اگر ٹیکس اکٹھا نہیں کریں گے تو قرضےمزید بڑھتے جائیں گے۔ ملک تب چلتا ہے جب حکومت اور عوام مل کر چلیں۔ قوم اور حکومت مل کر اس اسکیم کو کامیاب بنا سکتے ہیں۔ اگر کسی کے پاس وقت نہیں تو کم ازکم 30 جون سے پہلے رجسٹرڈ کرا لے۔

 

عمران خان کا کہنا تھا کہ بیرون ممالک سےایم او یو سائن کیے۔ پہلی بارمعلومات ہمارے پاس آئی ہیں۔ پاکستان میں پہلے کبھی بھی بے نامی قوانین نہیں تھے۔ پاکستان میں بےنامی قوانین پرسزا اورپراپرٹی ضبط ہوجائےگی۔ چوری کیا گیا پیسہ ہنڈی کے ذریعہ بیرون ملک منتقل کیا جاتا ہے۔ پاکستان میں 10ارب سالانہ منی لانڈرنگ ہوتی ہے۔

 

وزیر اعظم نے بتایا کہ پبلک آفس ہولڈر اور سیاستدانوں کے لیے ایمنسٹی اسکیم نہیں۔ اگرمنی لانڈرنگ پر قابو پا لیا تو قرضوں کی ضرورت نہیں پڑے گی۔ آج قرضوں کی قسط کی ادائیگیوں کے لیے قرضے لے رہے ہیں۔ ماضی کی پالیسیوں سے سمال اور میڈیم انڈسٹری کو نقصان پہنچا۔ جب کوئی ملک مقروض ہو جاتا ہے تو تھوڑا مشکل وقت برداشت کرنا پڑتا ہے۔

احمد علی کیف  3 ماه پہلے

متعلقہ خبریں