عالمی رہنماؤں کی وزیراعظم پاکستان سے خوشگوار گفتگو، مودی تنہائی کا شکار

 

ٹکا خان ثانی: وزیراعظم پاکستان عمران خان نے کہا ہے کہ پہلی مرتبہ ایشیاء عالمی تجارت اور روابط کا محور بن رہاہے، مشرق وسطیٰ اور خلیج کی صورتحال انتہائی اہم ہے۔ تنازعات کے خاتمے کے لیے شنگھائی تعاون تنظیم کو کردار ادا کرنا ہو گا۔

 

کرغزستان میں شنگھائی تعاون تنظیم کے سربراہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ پاکستان اور چین مشرق وسطیٰ اور وسطی ایشیا کےلیے اہم راہداری ہے۔ ہماری خارجہ پالیسی تمام ملکوں کے ساتھ اچھے تعلقات پر مشتمل ہے ۔ وزیراعظم نے کہا پاکستان سرمایہ کاروں کےلیے ایک پر کشش ملک ہے۔ دنیا کو پاکستان کی متحرک افرادی قوت سے فائدہ اٹھانا چاہیے۔

 

 

وزیراعظم پاکستان نے اپنے دورہ کے دوران چین کے صدر شی چینگ پن روسی صدر ولادی میر پیوٹن، بیلاروس کے صدر الیگزینڈر سمیت عالمی رہنماؤں سے ملاقاتیں کیں۔ جن میں دو طرفہ تعلقات اور باہمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ عالمی رہنماؤں نے دہشتگردی کے خلاف پاکستان کی کوششوں کو تسلیم کرتے ہوئے کہا کہ خطے میں اس سے استحکام آیا۔

 

 

عمران خان نے امن و استحکام اور خوشحالی کے لیے پاکستان کی طرف سے سات نکاتی ایجنڈا بھی پیش کیا۔

 

 

تنظیم کے سربراہ اجلاس کے دوران عالمی قائدین نے وزیراعظم عمران خان کے ساتھ خوشگوار گفتگو میں دلچسپی لی جبکہ دوسری جانب بھارتی وزیراعظم مودی تنہائی کے شکار دکھائی دیئے۔ فوٹو سیشن کے دوران بھی مودی قطار کے آخر میں چپ چاپ کھڑے رہے۔

 

 

روسی صدر وزیراعظم پاکستان عمران خان کے کے ساتھ مسلسل بات چیت کرتے دکھائی دیئے اور مودی جی کو کسی نے لفٹ نہ کرائی۔

 

احمد علی کیف  2 ماه پہلے

متعلقہ خبریں