وزیرِ اعظم کی خیبر پختونخوا میں نیا لوکل نظام نافذ العمل کرنے کی ہدایت

پبلک نیوز: وزیرِ اعظم عمران خان کی زیرصدارت صوبہ خیبر پختونخواہ میں نیا لوکل گورنمنٹ نظام متعارف کرانے کے سلسلے میں پیش رفت پر جائزہ اجلاس ہوا۔

اجلاس میں گورنر خیبر پختونخواہ شاہ فرمان، وزیرِ اعلیٰ محمود خان، وزیرِ اعظم کے مشیر محمد شہزاد ارباب، معاون خصوصی افتخار درانی، صوبائی وزراء شہرام خان تراکائی، سلطان خان، تیمور سلیم جھگڑا، حشام انعام اللہ، عاطف خان اور متعلقہ ڈیپارٹمنٹس کے افسران نے شرکت کی۔

اجلاس میں نئے لوکل گورنمنٹ کے نظام کے خدوخال اور مجوزہ نظام کو حتمی شکل دینے پر غور کیا گیا۔ وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ نئی لوکل گورنمنٹس کے قیام کا مقصد مقامی سطح پرلوگوں کو بااختیار بنانا ہے تاکہ تعمیر و ترقی کے فیصلے مقامی سطح پرطے پائیں۔

وزیرِ اعظم نے کہا کہ مقامی لوگ اپنے مسائل بہتر طریقے سے سمجھتے اور حل کرنے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔ ماضی میں خیبر پختونخواہ میں ویلیج کونسلز کے قیام کا تجربہ بہت کامیاب رہا۔ اس نظام کو مزید بہتر بنا کر عوام کو مقامی سطح پر بااخیتار کیا جائے گا۔

ان کا کہنا تھا کہ بدقسمتی سے انتظامی ڈھانچہ ملک کا سب سے بڑا مسئلہ رہا ہے۔ انتظامی ناکامی کی وجہ سے ملک میں اکثر مقامات پر شہری صحت، تعلیم، پانے کے صاف پانی اور دیگر بنیادی سہولتوں سے محروم رہتے ہیں۔ نئے نظام میں عوامی نمائندوں کو اختیار دے کر اس قابل بنایا جائے گا کہ وہ اپنے علاقوں کے مسائل مقامی سطح پر حل کر سکیں۔

وزیرِ اعظم کی نئے لوکل نظام کو آئندہ ایک ماہ میں تمام ضروری مراحل مکمل کر کے نافذ العمل کرنے کی ہدایت کر دی۔

احمد علی کیف  3 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں