سوچ تبدیل کرنا ہو گی، قوم قبائلی علاقوں کے عوام کے ساتھ کھڑی ہے: وزیراعظم

اسلام آباد(پبلک نیوز) وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ مشرقی پاکستان احساس محرومی کے باعث الگ ہوا، فاٹا کے عوام چاہتے ہیں ان کی بھی آواز سنی جائے، ماضی سے نکل کر ہمیں اپنی سوچ تبدیل کرنا ہو گی، جو علاقے پیچھے رہ گئے ہمیں ان کو ترقی یافتہ بنانا ہے۔

 

اسپیکر اسمبلی اسد قیصر کی زیر صدارت جاری قومی اسمبلی کے اجلاس میں وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ ساری قوم قبائلی علاقوں کے عوام کے ساتھ کھڑی ہے۔ فاٹا کے عوام چاہتے ہیں ان کی بھی آواز سنی جائے، فیصلہ کیا تھا تمام صوبے این ایف سی میں 3 فیصد فاٹا کو دیں، فاٹا کے عوام چاہتے ہیں وہ بھی مین اسٹریم میں ہوں، فاٹا کا دہشت گردی کے خلاف جنگ میں بہت نقصان ہوا۔ جنوبی پنجاب صوبہ بنانے کے لیے آئینی ترمیمی بل پر اتفاق کرنے پر تمام جماعتوں کا مشکور ہوں۔

متعلقہ خبر:جنوبی پنجاب صوبہ کیلئے آئینی ترمیمی بل قومی اسمبلی میں منظور، مسلم لیگ (ن) کی مخالفت

وزیراعظم نے کہا کہ مشرقی پاکستان احساس محرومی کے باعث الگ ہوا، جو علاقے پیچھے رہ گئے ہمیں ان کو ترقی یافتہ بنانا ہے، ہمارے دشمن احساس محرومی کو استعمال کر رہے ہیں، قبائلی علاقے کے لوگوں کو پتہ چلے گا کہ ہمیں ان کا احساس ہے، فاٹا میں بنیادی ڈھانچے، روزگار اور تعمیر وترقی کی ضرورت ہے۔ فاٹا کے عوام نے بہت مشکل حالات کا سامنا کیا، ماضی سے نکل کر ہمیں اپنی سوچ تبدیل کرنا ہو گی، متاثرہ علاقوں کی بحالی کے لیے پورے ملک کو ساتھ دینا ہو گا۔

ویڈیو کیلئے کلک کریں:

عطاء سبحانی  2 ماه پہلے

متعلقہ خبریں