سابق دور حکومت کا منصوبہ پنجاب حکومت کے لیے وبال جان بن گیا

لاہور(شاکر محموداعوان) سابق دور حکومت کا ایک اور منصوبہ پنجاب حکومت کے لیے وبال جان بن گیا۔ اربوں روپے کے فنڈز جاری ہونے کے باوجود ابھی تک دانش اسکولز کی تعمیر مکمل نہ ہو سکی۔

 

سابق دور حکومت کا ایک اور منصوبہ سفید ہاتھی بن گیا۔ فنڈز کی عدم دستیابی کے باعث متاثر پنجاب میں تاحال اربوں روپے مالیت کے 6 دانش اسکولز کا تعمیراتی کام مکمل نہ ہو سکا۔ سابقہ پنجاب حکومت کے دور حکومت میں پنجاب بھر میں پتیم، مسکین اور مزدوروں کے بچوں کےلیے قائم دانش اسکولز 3 سال سے مکمل ناں ہو سکے۔ پنجاب حکومت کیجانب سے 6 منصوبوں کی لاگت 5 ارب 23 کروڑ 74لاکھ 90 ہزار مقرر کی گئی تھی۔

 

پبلک نیوز کو موصول دستاویزات کے مطابق فیصل آباد ٹنڈوالا میں دانش اسکول کے لیے 16 کروڑ سے زاید کی رقم مختص کی گئیاور ابتک صرف 38 فیصد کام مکمل ہوسکا ہے، ٹوبہ ٹیک سنگھ میں 36 کروڑ 45 لاکھ 30 ہزار کا منصوبہ صرف 25 فیصد مکمل جبکہ بھکر میں زیر تعمیر منصوبے کے لیے 1 ارب 80 کروڑ 95 لاکھ 90 ہزار مختص کیے گیے۔

 

بھکر منکیرہ میں زیر تعمیر اسکول کا تاحال صرف 34 فیصد کام ہو سکا ہے۔ ڈی جی خان میں 1 ارب 63 کروڑ 13 لاکھ 50 ہزار کا منصوبے پر صرف 38 فیصد کام مکمل ہوسکا۔۔میلسی اور ننکانہ صاحب کے منصوبے کی لاگت 1 ارب 32،کروڑ 57 لاکھ 30 ہزار ہے جبکہ کام 90 فیصد تک مکمل کیا گیا ہے۔ دانش اسکولز کے 2018/19 کے لیے 9 ارب 63 کروڑ 70 لاکھ کا بجٹ رکھا گیا ہے۔ جبکہ 44 نئی اسکیموں کے لیے بھی اربوں روپے مانگ لیے گئے ہیں۔

عطاء سبحانی  3 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں