پشاور: اے این پی کی کارنر میٹنگ میں دھماکہ، ہارون بلور سمیت 20افراد شہید

پشاور (پبلک نیوز) صوبائی دارالحکومت میں عوامی نیشنل پارٹی (اے این پی) کی انتخابی مہم کے حوالے سے کارنر میٹنگ میں خود کش دھماکہ ہوا جس کے نتیجہ میں پارٹی کے رہنما اور کے پی 78 سے امیدوار ہارون بلور سمیت 13افراد شہید ہو گئے ہیں جبکہ سے 35افراد زخمی ہوئے ہیں۔

پبلک نیوز کے مطابق پشاور کے علاقہ یکہ توت میں دھماکہ اس وقت ہوا جب اے این پی کے رہنما اور صوبائی اسمبلی کے امیدوار ہارون بلور کی جانب سے کارنر میٹنگ جاری تھی۔ ابتدائی طور پر دھماکہ میں ہارون بلور سمیت 7 افراد کے زخمی ہونے کی اطلاعات موصول ہوئیں۔ زخمیوں کو ہسپتال منتقل کیا گیا۔ ہسپتال میں ہارون بلور کا فوری طور پر آپریشن کرنے کا بتایا گیا لیکن بعد ازاں ملنے والی اطلاعات میں اس بات کی تصدیق کی گئی کہ ہارون بلور شہید ہو گئے ہیں۔

ذرائع کے مطابق دھماکہ سے 13افراد شہید ہو ئے ہیں جبکہ 35زخمی ہوئے۔ پشاور لیڈی ریڈنگ ہسپتال میں ہنگامی صورتحال کا نفاذ کر دیا گیا ہے۔ کارنر میٹنگ میں قریباً 300 افراد موجود تھے۔ پارٹی رہنما شاہی سید کا کہنا ہے کہ ہمیں سکیورٹی نہیں دی گئی۔ یہاں تک کہ سکیورٹی کے لیے ایک اہلکار نہیں تھا۔ اگر سکیورٹی دی جاتی تو ایسا واقعہ پیش نہ آتا۔

سی سی پی او پشاور قاضی جمیل کے مطابق بم ڈسپوزل سکواڈ نے دھماکہ خود کش بتایا ہے جس میں 8 کلو ٹی این ٹی استعمال کیا گیا۔ جبکہ انھوں نے یہ بھی واضح کیا کہ ہارون بلور کی سکیورٹی پر دو اہلکار مامور تھے۔ آئی جی بم ڈسپوزل شفقت ملک کے مطابق دھماکہ کے لیے جو دھماکہ خیز مواد استعمال کیا گیا تھا وہ اچھے معیار کا تھا۔  

واضح رہے کہ ہارون بلور بشیر بلور کے صاحبزادے تھے۔ بشیر بلور بھی الیکشن 2013ء کے لیے انتخابی مہم کے دوران شہید ہو گئے تھے۔ بشیر بلور بھی اے این پی کے سینئر رہنما تھے۔

پاکستان کی سیاسی جماعتوں اور سیاستدانوں سمیت دیگر سماجی و سرکاری شخصیات کی جانب سے دھماکہ کی مذمت کی گئی۔ تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے مذمت کرتے ہوئے کہا کہ عوامی نیشل پارٹی کی کارنر میٹنگ پر دہشت گرد حملے کی جتنی بھی مذمت  کی جائے کم ہے۔ ہارون بلور اور ان کے ساتھیوں کی شہادتوں پر دل انتہائی مغموم ہے۔ ریاست انتخابی مہم کے دوران تمام سیاسی جماعتوں اور ان کے امیدواروں کے لیے سکیورٹی یقینی بنائے۔

چیئرمین پاکستان پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری کا عوامی نیشنل پارٹی کے جلسہ میں دہشتگردی کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہنا ہے کہ شہید بشیر بلور کے بیٹے ھارون بلور کی شہادت پر سب وطن پرست غمگین ہیں۔ شہید ھارون بلور کے غمزدہ خاندان کے دکھ میں شریک ہیں۔ پیپلز پارٹی دہشتگردی کے شکار ہر پاکستانی کے  ساتھ کھڑی رہے گی۔ ملک دشمن عناصر دہشتگردی کے ذریعے پاکستان اور جمہوریت کو کمزور کرنا چاہتے ہیں۔ پاکستان کے دشمن دہشتگردی کے ذریعے ملک اور جمہوریت پر حملہ آور ہیں۔

سابق وزیر اعظم میاں نواز شریف کی صاحبزادی مریم نواز نے سوشل میڈیا ویب سائٹ پر ٹیلی وژن پر ہارون بلور کی شہادت کے حوالے سے چلنے والی خبر کا سکرین شاٹ شیئر کیا اور اوپر انا للہ وانا علیہ راجعون تحریر کیا۔

سابق وزیر اعلیٰ پنجاب اور صدر ن لیگ میاں شہباز شریف نے کہا ہے کہ شہید ہونے والوں کے اہل خانہ کے غم میں برابر کے شریک ہیں اور اللہ تعالیٰ سے ان کے لیے صبر جمیل کی دعا ہے۔ ہارون بلور کی شہادت سے ہمارے دہشت گردی کے خلاف عزائم مزید پختہ ہوئے ہیں۔ ہارون بلور کی شہادت ایک قومی سانحہ ہے۔ ہم ایک زندہ قوم ہیں جس کے عزائم کو کوئی متزلزل نہیں کر سکتا۔

سابق وزیر اعظم میاں نواز شریف نے بھی مذمت کی اور کہا کہ جمہوریت کا راستہ روکنے کے لیے دہشت گردوں کی جانب سے مذموم کوششیں کی جا رہی ہیں۔ دہشت گرد آج بھی اسی طرح ناکام ہوں گے جس طرح کل ناکامی سے دو چار ہوئے تھے۔ ہارون بلور کے اہل خانہ کے غم بھی برابر کے شریک ہیں۔

الیکشن کمیشن آف پاکستان کے چیف سردار محمد رضا کا کہنا ہے کہ دھماکہ سکیورٹی اداروں کی کمزور ہے۔ ہارون بلور کی کارنر میٹنگ پر کیا گیا حملہ بنیادی طور پر شفاف الیکشن کی کوششوں پر حملہ ہے۔ صوبائی حکومتوں کو احکامات دیئے گئے تھے کہ امیدواروں کو فول پروف سکیورٹی دی جائے۔ جبکہ پاک سرزمین پارٹی کے چیئرمین مصطفیٰ کمال نے مذمت کرتے ہوئے کہا کہ وہ لوگ انسان کہلانے کے مستحق نہیں ہیں جو نہتے لوگوں کے خون سے اپنے ہاتھ رنگتے ہیں۔ ذمہ داران کو قانون کی گرفت میں لانا ازحد ضروری ہے۔

احمد علی کیف  2 ماه پہلے

متعلقہ خبریں