شہباز شریف کو ہٹانے پر غور، نئے چیئرمین پی اے سی کون ہونگے؟

اسلام آباد (ٹکا خان ثانی) وفاقی حکومت کے لئے شہباز شریف بطور چیئرمین پبلک اکاونٹس کمیٹی ناقابل قبول۔ حکومت نےٹف ٹائم دینےکا فیصلہ کرلیا۔ عدالتی فیصلے کے بعد شہبازشریف کو ہٹانے پرغور کیاجائے گا۔

تفصیلات کے مطابق شہباز شریف نے حکومت کو یقین دہانی کے باوجود اسمبلی میں سخت تقریر کی۔ وزیراعظم کی موجودگی میں احتجاج کو روکنے کی بجائے ہوا دیتے رہے۔ ساتھ ہی بطور چیئرمین پی اے سی کو ذاتی ایجنڈے کے لئے استعمال کیا تو حکومت کا ان پر اعتماد جاتا رہا۔

حکومت نے بڑے دل کا مظاہرہ کرکے شہباز شریف کو چیئرمین پی اے سی بنایا لیکن شہباز شریف نے چیئرمین بنتے ہی آنکھیں دکھانا شروع کردیں، جس پر حکومت نے بھی شہباز شریف کو پبلک اکاونٹس کمیٹی کی چیئرمین شپ سے ہٹانے کی ٹھان لی۔

حکومتی ذرائع کے مطابق حکومت نے اس حوالے سے آئینی پیچیدگیوں پر مشاورت سمیت مختلف آپشنز پر غور بھی شروع کردیا ہے۔ حکومتی ذرائع بتاتے ہیں وزیر اعظم نے کئی پارٹی رہنماؤں کی مخالفت کے باوجود سیاسی مصالحت کا مظاہر کیا تاہم شہباز شریف کا رویہ سامنے آنے پر پارٹی کی جانب سے وزیر اعظم بھی پر دباو بڑھ گیا۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ وزیر اعظم عمران خان اور شیخ رشید کی ملاقات میں بھی ایسے ہی معاملات زیر بحث آئے۔ تاہم حکومت کو شہبازشریف سے متعلق بڑے فیصلے کے لیے عدالت کے فیصلے کا انتظارہے۔

دوسری جانب حکومت نے چیئرمین پی اے سی کے لیے مختلف ناموں پر غور شروع کر دیا ہے۔ حکومت کی اگلے چیئرمین پبلک اکاونٹس کمیٹی کے لیے ن لیگی رہنما ایاز صادق پر نظر ہے۔

احمد علی کیف  6 ماه پہلے

متعلقہ خبریں