پنجاب اسمبلی اجلاس، حکومتی اور اپوزیشن ارکان میں تلخ کلامی

 

لاہور (پبلک نیوز) پنجاب اسمبلی کے اجلاس میں لیگی ایم پی اے رانا مشہود اور چودھری ظہیر کے درمیان تلخ جملوں کا تبادلہ ہوا۔ عنایت اللہ لک نے اپوزیشن رکن خلیل طاہر سندھو کو خاکروب کہہ دیا۔ پیپلزپارٹی کے حسن مرتضیٰ بے نظیر کے خلاف نا مناسب الفاظ کے استعمال پر سیخ پا ہو گئے۔

 

تفصیلات کی مطابق اپوزیشن کی ریکوزیشن پر طلب کیا گیا پنجاب اسمبلی کا اجلاس ہنگامہ آرائی، دھرنوں اور احتجاج کی نذر ہوگیا۔ اجلاس میں اقلیتی رکن اسمبلی خلیل طاہر سندھو اسمبلی کے ڈی جی پارلیمانی امور عنایت اللہ لک کی جانب سے اقلیتوں کے خلاف تضحیک آمیز الفاظ  پر  سیاہ پٹی باندھ کر شریک ہوئے اور  بات کرتے ہوئے آبدیدہ ہوگئے.

 

لیگی رکن اسمبلی خلیل سندھو کا کہنا تھا کہ مجھے خاکروب کہا گیا اگر یہی سلوک جاری رہا تو پاکستان چھوڑ جائوں گا۔ گیارہ سالہ عیسائی بچے کے ساتھ زیادتی کے معاملے پر ڈپٹی سپیکر نے نوٹس لیتے ہوئے انکوائری کا حکم دے دیا۔

 

لیگی ایم پی اے رانا مشہود اور چوہدری ظہیر میں تلخ جملوں کا تبادلہ ہوا۔ رانا مشہود نے پی ٹی آئی حکومت کو دو ماہ میں ختم کرنے کا دعویٰ کیا تو  صوبائی وزیر مراد راس نے رانا مشہود کی گرفتاری کا عندیہ بھی دیدیا۔

 

پی پی پارلیمانی لیڈر حسن مرتضی نے بینظیر بھٹو پر تنقید کا معاملہ اٹھایا۔ صوبائی وزیر قانون راجہ بشارت نے اپوزیشن کی اس حوالے سے مذمتی قرارداد اور دیگر معاملات بھی منگل تک  حل کروانے کی یقین دہانی کروادی۔

 

واضح رہے کہ حکومت کی جانب سے کورم کی نشاندہی پر ڈپٹی سپیکر نے اجلاس غیر معینہ مدت کے لیے ملتوی کر دیا۔

احمد علی کیف  3 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں