پنجاب حکومت نے سستی روٹی سکیم کیلئے فنڈز مختص کر دیے

لاہور(پبلک نیوز) پنجاب حکومت کی جانب سے سستی روٹی سکیم کے لئے فنڈز مختص کر دیے گئے ہیں، سیکریٹری خزانہ نے آڈٹ پیراز پر وضاحت کرتے ہوئے محکمہ انڈسٹریز کی سستی روٹی سکیم بند کرنے کی سمری مسترد کر دی۔

 

پنجاب حکومت نے سستی روٹی سکیم میں ملازمین کے اخراجات کیلئے 70لاکھ 96 ہزار، 3افسران کیلئے 22 لاکھ 38 ہزاراور الائونسز کی مد میں 31لاکھ 80ہزار روپے مختص کیے ہیں۔ 1 لاکھ روپیہ اعزازیہ آپریٹنگ اخراجات کیلئے 22 لاکھ 71 ہزار روپے مختص کیے گئے ہیں۔

 

رمضان المبارک 2008ء میں دو روپے میں روٹی فراہم کرنے کا منصوبہ شروع کیا گیا اور حنیف عباسی کو چیئرمین تعینات کیا گیا۔ دستاویزات کے مطابق قیام سے اب تک سستی روٹی سکیم میں فیلڈ آفیسرز ہی تعینات نہیں کیے گئے۔ 11ارب 32 کروڑ 98 لاکھ روپے کی سبسڈی دی گئی۔

 

دستاویزات کے مطابق 296 مکینیکل تندوروں کے لیے 6 کروڑ 58لاکھ 50ہزار روپے خرچ کیے گئے۔ تندور لینے والوں نے سات سال سے ایک بھی قسط جمع نہیں کروائی اور گوجرانوالہ، فیصل آباد، راولپنڈی کے ریجنل دفاتر تاحال تندوروں کے قرضوں کی وصولی میں ناکام رہے۔ حکومتی ترجیحات میں عوامی مفاد کے منصوبوں سے عام آدمی کو مستفید کرنے کیلئے منصوبہ بندی ترتیب دینے کی ضرورت ہے۔

عطاء سبحانی  3 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں