ہائی ویز پر حادثات حکومت کی مبینہ غفلت اور ناقص پالیسی کے باعث ہونے کا انکشاف

لاہور (شاکر محمود اعوان) اربوں روپے کی لاگت سے بننے والی ایکسپریس ہائی ویز پر حادثات حکومت کی مبینہ غفلت اور ناقص پالیسی کے تحت پیش آنے کا انکشاف۔

سابقہ پنجاب حکومت کے دور میں بنی ایکسپریس ہائی وے پر بیشتر حادثات حکومت کی اپنی کوتاہی ہے باعث ہو رہے ہیں۔ ڈرایکٹر جنرل مانیٹرنگ اینڈ ایلوایشن نے شجاع آباد تا ملتان کےلیے تعمیر ایکسپریس وے کی رپورٹ میں انکشاف کیا کہ حکومتی خزانے سے اربوں روپے کے فنڈز جارے کیے گیے لیکن عوام کے لیے محفوظ سفر کو یقینی نہیں بنایا جا سکا۔

رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ شجاع آباد سے ملتان تک بنائی گئی ہائی وے کے دونوں اطراف حفاظتی اقدامات کو نظر انداز کیا گیا جو بڑے حادثوں کا سبب بن سکتا ہے۔

حکومت پنجاب کی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ ایکسپریس ہائی وے کے اطراف حفاظتی باؤنڈری وال نہیں بنائی گئی۔ ایکسپریس وے میں متعدد جہگوں پر بجلی کے کمبے درمیان میں لگے ہوئے ہیں جبکہ متعدد جگہ ہائی ولٹیج تاریں سڑک کے درمیان سے گزر رہی ہیں۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ روڈ پینٹنگ اور ریفلیکٹرز نہیں ہیں جس کے باعث حادثات ہوتے ہیں جبکہ متعدد جگہ ڈبل وے کی درمیانی باؤنڈری وال میں مٹی نہیں ڈالی گئی اور متعدد جگہ تو ڈبل وے کے درمیان میں باؤنڈری ہی نہیں بنائی گئی جس سے ٹریفک حادثات رونما ہوتے ہیں۔

حکومت پنجاب نے ایکسپریس ہائی وے شجاع آباد سے ملتان منصوبے پر 1 ارب 3 کروڑ 8 لاکھ 20 ہزار روپے سے تعمیر ایکسپریس وے منصوبے پر خطیر رقم خرچ کی ۔ منصوبے کو مکمل ہوئے 2 سال سے زائد کا عرصہ گزر چکا ہے لیکن تاحال مین شاہراہ پر حفاظتی اقدامات نہیں کیے گیے جو ٹریفک حادثوں کا سبب بن رہے ہیں۔

احمد علی کیف  4 ماه پہلے

متعلقہ خبریں