حکومت پنجاب نے ای چالان کی مد میں ریونیو کا ٹارگٹ 100 فیصد بڑھا دیا

لاہور(شاکر محمود اعوان) خبردار، ہوشیار، حکومت پنجاب نے ٹریفک اور ای چالان کی مد میں ریونیو کے ٹارگٹ میں اضافہ کر دیا۔ پنجاب حکومت نے لاء اینڈ فورسسز ایجنسیز کو قانون شکنی کرنے والوں کو بھاری جرمانے کرنے کی ہدایت کر دی ہے۔

 

حکومت پنجاب نے ٹریفک اور ای چالان کی مد میں ریونیو کا ٹارگٹ 100 فیصد بڑھا دیا، حکومت پنجاب نے اپنے ریونیو کو بڑھانے کے لیے ٹریفک پولیس اور سیف سٹی اتھارٹی کا بھرپور استعمال کرنے کا فیصلہ کر لیا ہے۔ ٹریفک سگنل، ہیلمٹ، لائسنس اور ٹریفک قوانین کیخلاف ورزی کرنے والے افراد پر اب بھاری جرمانے کرنے کا ٹارگٹ دے دیا ہے۔ پنجاب حکومت کی دستاویزات کے مطابق سال 2019/20 میں ٹریفک چالان کی مد میں 4 ارب 20 کروڑ جبکہ ای چالان کی مد میں 55 کروڑ کا ریونیو اکٹھا کرنے کا ٹارگٹ دیا گیا ہے جو گزشتہ سال کی نسبت 100 فیصد زیادہ ہے۔

پنجاب حکومت نے سال 2019/20 میں مجموعی طور میں 6 ارب 32 کروڑ 20 لاکھ اکٹھے کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے، پنجاب پولیس کیجانب سے فیڈرل، ریلوے اور دیگر اداروں کو خدمات کے عوض 33 کروڑ 75 لاکھ کا ٹارگٹ دیا گیا ہے جبکہ موٹر ڈرائیونگ لائسنس 87 کروڑ 96 لاکھ 90 ہزار کا ریونیو اکٹھا کرنے کا ٹارگٹ رکھا گیا ہے، کلیکشن آف پیمنٹس، فیسوں سمیت دیگر کی مد میں 12 کروڑ 50 لاکھ اکٹھے کیے جائیں گے۔ پنجاب حکومت نے سال 2018/19 میں ٹریفک چالان سمیت دیگر کی مد میں 4 ارب سے زائد کا ہدف دیا گیا، جسے باآسانی حاصل کر لیا گیا تھا۔

عطاء سبحانی  3 ماه پہلے

متعلقہ خبریں