پنجاب لوکل گورنمنٹ ایکٹ 2019 لاہور ہائی کورٹ میں چیلنج

لاہور (پبلک نیوز) سابق وفاقى وزیر دانیال عزیز چودھرى نے پنجاب لوکل گورنمنٹ ایکٹ 2019 لاہور ہائی کورٹ میں چیلنج کر دیا ہے۔ انھوں نے اعتراض اٹھایا ہے کہ لوکل گورنمنٹ ایکٹ آئین کے آرٹیکل 32 اور 140A کی صریحاً خلاف ورزى ہے۔  

درخواست میں مؤقف اپنایا گیا کہ ضلعى حکومت، کونسل کو سرے سے ختم کر دیا گیا جو که خلاف آئین و قانون ہے۔ انتخاب کو پارٹی و نان پارٹی میں تقسیم کر دیا گیا جو که اعلٰى عدالتوں کے فیصلہ جات اور آئین کے آرٹیکل17 کی صریحاً خلاف ورزی ہے۔

لوکل گورنمنٹ کى 5 ساله میعاد کو غیر قانونی و غیر آئینى طور پر ختم کرنا سیکشن30 ایکٹ 2013 اور آرٹیکل 140A و 32 کی خلاف ورزی ہے۔ لوکل گورنمنٹ کی سیاسی ، انتظامى اور مالى اختیار اور ذمہ دارى کو پى ٹى آئی کى صوبائی حکومت نے عملاً سلب کر لیا ہے۔

لوکل گورنمنٹ ایکٹ2019 اور نوٹیفکیشنز کو خلاف آئین و قانون قرار دیتے ہوئے کالعدم کیا جائے اور لوکل گورنمنٹ کى آئینی خود مختارى کو یقینی بنایا جائے۔

جسٹس مامون رشید شیخ آج درخواست پر سماعت کریں گے۔

احمد علی کیف  3 ماه پہلے

متعلقہ خبریں