غریب بچوں کو تعلیم سے دور رکھنے کی سازش، حکومت نے نصابی کتابیں مہنگی کر دیں

 لاہور (سدرہ غیاث) تبدیلی سرکار کا تعلیم پر بھی وار، پٹرول، دالوں کے بعد کتابیں بھی مزید مہنگی ہو گئیں۔ پنجاب ٹیکسٹ بورڈ نے 8سے 10فیصد نصابی کتابوں کی قیمتوں میں اضافہ کر دیا، والدہ کا کہنا ہے کہ کتابوں کی قیمتوں میں اضافہ فوری واپس لیا جائے۔

تفصیلات کے مطابق طلبہ کا مستقبل بھی مہنگائی کی زد میں آ گیا۔ کتابوں کی قیمتوں میں 8 سے 10 فیصد اضافےنے غریب عوام کا بھرکس ہی نکال دیا ہے۔ پہلی جماعت سے دسویں جماعت تک کتابوں کی قیمتوں میں اضافہ کے باعث ملک کا مستقبل میں خطرے میں پڑ گیا ہے فزکس، کیمسٹری، اردو انگلش، کی کتابوں میں ہوشربا اضافے سے طلبہ بھی پریشان ہے۔

والدین کا کہنا ہے کہ دو وقت کی روٹی بھی ان کی دسترس سے دور ہو رہی اور اب پڑھائی بھی غریب کی پہنچ سے دور ہو گئی ہے بچوں کو پڑھانا اب ان کے بس میں نہیں۔

والدین کا کہنا ہے کہ تعلیم اب ایک خواب بن کر رہ گیا ہے حکومت نے کتابوں کی قیمتوں میں اضافہ کر کے طلبہ کئ تعلیم اور مستقبل پر بوجھ ڈالا جا رہا ہے۔

احمد علی کیف  2 ماه پہلے

متعلقہ خبریں