ایک بارش سے شہر قائد میں پانی پانی

 

کراچی (پبلک نیوز) ایک بارش نے کراچی میں انتظامیہ کی کارکردگی اور 'کے الیکٹرک' کے دعؤوں کی قلعی کھول دی۔ اربوں کا فنڈ سیوریج سسٹم کی بہتری پر لگا دیا گیا لیکن نتیجہ صفر۔ اداروں کی آپس کی لڑائی میں عوام کی پریشانی کی اگر کسی کو  فکر ہے تو وہ خود عوام ہیں۔

 

کراچی میں تمام پارٹیاں اسٹیک ہولڈر ہیں، لیکن اون کوئی نہیں کرتا۔ سب اپنے مفاد کی جنگ لڑ رہے ہیں۔ کوئی فنڈ دینے کا رونا روتا ہے کوئی فنڈ نا ملنے کا رونا رو رہا ہے۔ موم سون بارشوں نے کراچی کے باسیوں کی زندگی کو خوشگوار تو کیا مگر حکومتی اداروں کی نااہلی نے ان کو کرب میں مبتلا کردیا ہے۔ بارش کیا ہوئی سیورج کا نظام  درہم برہم، صاف پانی نایاب، اسٹریٹ لائٹ ناکارہ، نکاسی آب کا بوسیدہ نظام اور کے الیکٹرک کی نااہلی نے ابر رحمت کو ابر زحمت بنا ڈالا۔

 

بارش سے ہونے والی تباہیوں کے سبب عدالتوں میں کارروائی متاثر، دفاتر میں حاظریاں کم، سکول بند ایسا معلوم ہوتا ہے شہر کراچی بارش میں نہیں بلکہ حالت جنگ میں ہو۔

احمد علی کیف  4 ماه پہلے

متعلقہ خبریں