حکومت روٹ پر سکیورٹی فراہم کرے ایک پتہ بھی نہیں ٹوٹے گا: رانا ثناء اللہ

لاہور (پبلک نیوز) پاکستان مسلم لیگ ن کے مرکزی رہنما رانا ثنا اللہ نے کہا ہے کہ نواز شریف کی 6 ہفتوں کی بیل میں اضافہ نا ہونے پر مغرب کے بعد گرفتاری دیں گے۔ قوم کا محسن جس نے ملک سے دہشت گردی کا خاتمہ کیا اور سی پیک جیسا منصوبہ دیا اس لیڈر کو صحت کی خرابی کے باوجود مہلت نہیں دی جا رہی۔

پریس کانفرنس کرتے ہوئے انھوں نے بتایا کہ اس افسردہ موقع پر لاہور کے پارٹی رہنماؤں کے روٹ پر اظہار یک جہتی کے لیے موجود ہوں۔ لاہور کی ضلعی انتظامیہ اور ایس پی سکیورٹی نے حیلے بہانے بنا کر معذرت کر لی۔ سپریم کورٹ کے احکامات کے مطابق 12 بجے تک کا وقت ہے۔ لہٰذا وہ 11:59 پر بھی جیل جا سکتے ہیں۔

انھوں نے کہا کہ ن لیگی کارکن کو گرفتار کیا گیا جس کا ردعمل شدید ہو گا۔ روٹ پر سکیورٹی فراہم کریں ایک پتہ بھی نہیں ٹوٹے گا۔ قانون نافذ کرنے والے ادارے جعلی حکمرانوں کے آلہ کار بن کر ایونٹ کو سبوتاژ نہ کریں۔

رانا ثنا کا کہنا تھا کہ حمزہ شہباز پر احتساب کے نام پر گھر میں چادر اور چار دیوری پر حملہ کرنے پر آئی جی پنجاب تبدیل ہوا۔ آئین و قانون کے مطابق ہم مل کر افطاری کریں گے۔ روٹ کو بلاک کرنے کی کوشش نا کی جائے۔ اگر ہمیں روکا گیا تو جیل بھرو تحریک شروع کر دیں گے۔

لیگی رہنما نے کہا کہ شدید تحفظات کے باوجود ہم سپریم کورٹ کے ہر فیصلہ پر عمل کیا۔ عدالت فیصلوں سے بولتی ہے، ہمیں نہ امید نہ کریں۔ وزیر اعظم خود این آر او کی بات اور عدلیہ کی توہین کر رہے ہیں۔ پانچ بجے شام کا وقت وزرا کی جانب سے دیا جا رہا ہے۔

سابق صوبائی وزیر قانون کا یہ بھی کہنا تھا کہ جعلی حکومت انتظامیہ کو نواز شریف کے ساتھ اظہار یک جہتی ایک آنکھ نہیں بھا رہا۔ عاشق باجی اعوان اٹکھیلیاں نہ کریں۔ ان کی عزت کرتا ہوں اور کرنا چاہتا ہو۔ نواز شریف کو قوم اپنا محسن سمجھتی ہے اور پیار کر تی ہے۔

احمد علی کیف  3 ماه پہلے

متعلقہ خبریں