ٹرمپ کے پاکستان مخالف بیان کی وجوہات کیا ہیں؟

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ایک بار پھر پاکستان مخالف بیان داغ دیا۔ اس بیان کی وجوہات کیا ہیں اور اسکا وقت کتنا اہم ہے؟

بغیر سوچے سمجھے بیانات دینے والے ڈونلڈ ٹرمپ کے پاکستان مخالف بیان کا وقت نہایت اہم ہے۔ جس وقت وزیرِ اعظم پاکستان متحدہ عرب امارات کے اہم  دورہ پر تھے، اس وقت امریکی صدر نے پاکستان کے خلاف زہر فشانی کی۔

ماہرینِ خارجہ امور کے مطابق ڈونلڈ ٹرمپ نے افغانستان میں اپنی ناکامیوں پر پردہ ڈالنے کے لیے یہ بیان دیا۔ امریکہ کی ناکام افغان پالیسی اس کے  لیے دردِ سر ہے۔ اس خفت سے بچنے کے لیے پاکستان پر دشنام طرازی کی جا رہی ہے۔

پاکستان اور امریکہ کے تعلقات پہلے ہی سے کشیدہ تھے۔ ڈونلڈ ٹرمپ کے حالیہ بیان کے بعد یہ کشیدہ تر ہو چکے ہیں۔ تعلقات ایک قدم آگے بڑھتے ہیں تو ایسے بیانات کے باعث دو قدم پیچھے چلے جاتے ہیں۔

امریکی جنرل جوزف ووٹل نے فروری 2018 میں بیان دیا تھا کہ امریکہ کو پاکستان کی جانب سے مثبت اشارے مل رہے ہیں۔ بیان کے بعد نئی حکومت کا قیام عمل میں آیا تھا۔

امریکی وزیرِ خارجہ مائیک پومپیو نے بھی پاکستان کا دورہ کیا تھا۔ جسے حوصلہ مند پیش رفت قرار دیا جا رہا تھا۔ مگر امریکی صدر کے پاکستان پر حالیہ الزامات نے دونوں ممالک کے تعلقات کو ایک بار پھر سرد مہری کا شکار کر دیا ہے۔

احمد علی کیف  4 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں