8 ارب روپے پینے کے صاف پانی کی فراہمی کیلئے مختص کرنے کی تجویز

لاہور(ادریس شیخ) سابق دور حکومت میں صاف پانی کی فراہمی میں کرپشن کے داغ کے مدنظر موجودہ انتظامیہ کو بد انتظامی اور بے ضابطگیوں سے بچنے کے احکامات جاری کر دیئے گئے۔ آئندہ مالی سال میں 8 ارب روپے پینے کے صاف پانی کی فراہمی کیلئے مختص کرنے کی تجویز دی گئی ہے۔

 

پنجاب حکومت کی جانب سے محکمہ خزانہ، پیپرا پنجاب، پی اینڈ ڈی پنجاب کو پینے کے پانی کی فراہمی کی سکیموں کو کرپشن سے پاک رکھنے کے احکامات جاری کیے گئے ہیں، آئندہ مالی سال میں پینے کے پانی کی فراہمی کیلئے 8 ارب کی خطیر رقم مختص کرنے کی تجویز دے دی گئی ہے، اس پر عملدرآمد کیلئے سرکاری محکموں کو پینے کے پانی کی فراہمی کی سکیموں میں پیپرا رولز پر عملدرآمد، شفاف ٹینڈرنگ کو ملحوظ خاطر رکھنے کا حکم دیا گیا ہے۔

 

8 ارب روپے سے پنجاب کے دیہی علاقوں میں بطور خاص پینے کے پانی کی فراہمی کی سکیمیں مکمل کرنے کے احکامات بھی جاری کیے گئے ہیں، دیہی علاقوں میں پینے کے پانی سے متعلق سکیموں میں مقامی افراد کی مشاورت بھی حاصل کی جائے گی۔ پنجاب حکومت کی جانب سے سکیموں کی منظوری کے دوران محدود قومی وسائل کے بہترین استعمال کو اولین ترجیحات میں شامل کرنے کی ہدایت بھی کی گئی ہے۔ گزشتہ دور حکومت میں صاف پانی کمپنی میں کرپشن کا انکشاف کیا گیا، صاف پانی کمپنی کرپشن اسکینڈل میں شہباز شریف، حمزہ شہباز اور اعلیٰ بیوروکریٹس بھی نامزد ہیں۔

عطاء سبحانی  3 ماه پہلے

متعلقہ خبریں