خواجہ برادران کے خلاف 17 فولڈرز پر مشتمل ریفرنس احتساب عدالت میں دائر

لاہور(شاکر محمود اعوان) خواجہ برادران عیدالفطر گھر منائیں گے یا جیل میں فیصلہ 3 جون کو ہونے کا امکان، نیب لاہور نے خواجہ برادران کے خلاف 17 فولڈرز پر مشتمل ریفرنس احتساب عدالت میں دائر کر دیا۔

 

نیب لاہور نے پرا اگون سوسائٹی میں گرفتار خواجہ سعد رفیق اور خواجہ سلمان رفیق کے خلاف 17 فولڈرز پر مشتمل ریفرنس احتساب عدالت میں فائل کر دیا ہے اور پراگون سوسائٹی سے لاتعلقی کا اعلان کرنے والے خواجہ برادران پراگون سوسائٹی میں 93 اعشاریہ 3 فیصد کے مالک نکلے۔ نیب ریفرینس میں کہا گیا ہے کہ خواجہ سعد رفیق نے سرکاری زمین پراگون میں منتقل کی، موضع پھلروان کی 21 کنال 18 مرلے، موضع پھلروان میں مزید 13کنال 5 مرلے موضع ڈورگھئی خورد میں 4 کنال 18 مرلے کی جگہ پرا اگون میں منتقل کی۔

 

نیب ریفرنس میں کہا گیا ہے کہ خواجہ برادارن نے سادہ لوح شہریوں کو 59 کروڑ روپے کا نقصان پہنچایا جبکہ پرااگون کے کمرشل پلاٹس میں بھی خرد بُرد کی۔ ریفرنس میں خواجہ برادران کے علاوہ، ندیم ضیا، عمر ضیا، اور فرحان علی کو بھی نامزد کیا گیا ہے۔ خواجہ برادران کے خلاف 122 افراد نے بیانات نیب کو قلمبند کرائے ہیں، خواجہ سعد رفیق پر پراگون سٹی سے 5 کروڑ 80 لاکھ اور خواجہ سلمان رفیق پر 3 کروڑ 90 لاکھ روپے کے مالی فوائد حاصل کرنے کا الزام بھی ہے۔ خواجہ برادران کے خلاف 68 افراد نے نیب کو شکایات درج کرائیں جبکہ قیصر امین بٹ وعدہ معاف گواہ بن چکے ہیں۔

عطاء سبحانی  3 ماه پہلے

متعلقہ خبریں