لاہور ہائیکورٹ: خواجہ سعد، سلمان رفیق کی 24 اکتوبر تک ضمانت منظور

لاہور (پبلک نیوز) لاہور ہائیکورٹ نے مسلم لیگ ن کے رہنما خواجہ سعد رفیق اور سلمان رفیق کی درخواست ضمانت منظور کر لی اور نیب کو 24 اکتوبر تک گرفتاری سے بھی روک دیا۔

تفصیلات کے مطابق خواجہ سعد رفیق اور خواجہ سلمان رفیق کے سر پر گرفتاری کے منڈلاتے بادل کچھ وقت کے لیے  چھٹ گئے۔ لاہور ہائیکورٹ نے قبل از گرفتاری درخواست ضمانت منظور کرتے ہوئے نیب کو 24 اکتوبر تک گرفتار کرنے سے روک دیا۔ لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس علی باقر نجفی کی سربراہی میں دو رکنی بنچ نے سماعت کی۔ خواجہ سعد رفیق اور سلمان رفیق نے حفاظتی ضمانت، قبل از گرفتاری ضمانت اور کیسز کی تفصیلات کے لیے درخواست دائر کی۔ دائر درخواست میں نیب سے  وارنٹ گرفتاری کے حوالے سے تفصیلات بھی مانگتے ہوئے عدالت کو بتایا گیا کہ 16 اکتوبر کو نیب نے خواجہ برادران کو طلب کر رکھا ہے۔

درخواست گزار کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ نیب نے جو ریکارڈ مانگا وہ فراہم کیا ہے۔ خدشہ ہے نیب کی جانب سے گرفتار کر لیا جائے گا۔ لہذا لاہور ہائی کورٹ ضمانت منظور کرے۔

عدالت نے خواجہ سعد رفیق اور ان کے بھائی کی درخواست ضمانت 5 لاکھ کے مچلکوں کے عوض منظور کرتے ہوئے نیب کو نوٹس جاری کر دیے اور نیب کو 24 اکتوبر تک گرفتاری سے روک دیا۔

حارث افضل  1 ماه پہلے

متعلقہ خبریں