ملزم کے اہلخانہ صلح کے لیے دباؤ ڈال رہے ہیں، غلط انجکشن سے ہلاک ہونیوالی بچی کی والدہ

کراچی (پبلک نیوز) جعلی ڈاکٹروں نے عوام کا جینا دوبھر کر دیا۔ گھر اجاڑ دیئے۔ کراچی گلشن اقبال میں جعلی ڈاکٹر کے غلط انجکشن سے جان کی بازی ہارنے والی چھے سال کی بچی کی ماں غم سے نڈھال ہے۔

بچی کی والدہ کا کہنا ہے کہ ملزم عدنان کے خاندان والے اب صلح کے لیے دباؤ ڈال رہے ہیں۔ پولیس بھی ملزم کو پروٹوکول دے رہی ہے۔ ملزم نے جعلی ڈگری بنا کر دینے والے دوسرے ڈاکٹر کا نام وحید بتایا ہے جو تاحال گرفتار نہیں ہوا۔

صبا کی طبیعت خراب ہونے پر ڈاکٹر عدنان کے کلینک لے گئے۔ ڈاکٹر نے دوائیاں منگوائی، ہم دوا لینے گئے اس وقت ڈاکٹر نے انجیکشن لگایا، ڈاکٹر کو معلوم نہیں تھا وہ کون سا انجکشن لگا رہا ہے، انجکشن لگتے ہی بچی کا رنگ کالا پڑ گیا، سانس رک گئی، طبیعت بگڑنے پر ڈاکٹر عدنان نے کہا کہ بچی کو کسی اور اسپتال میں دکھاؤ۔

 بچی کی والدہ کا کہنا تھا کہ اس کی بچی ترپتی رہی اور کلینک والوں نے انھیں دھکے دے کر نکال دیا۔ ہم عدالت سے انصاف چاہتے ہیں۔

احمد علی کیف  2 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں