'اندرونی معاملات میں مداخلت'، کینیڈین سفیر کو سعودی عرب چھوڑنے کا حکم

ریاض(پبلک نیوز) کینیڈا کے 'اندرونی معاملات میں مداخلت' کرنے پر سعودی عرب نے کینیڈین سفیر کو ناپسندیدہ شخصیت قرار دیتے ہوئے 24 گھنٹے میں سعودی عرب چھوڑنے کا حکم دے دیا اور ساتھ ہی کینیڈا سے اپنے سفیر کو بھی واپس بلا لیا۔

 

کینیڈا نے گزشتہ دنوں سعودی عرب سے انسانی حقوق کے کارکنوں کی قید ختم کرکے ان کو رہا کرنے کا مطالبہ کیا تھا، جس پر سعودی عرب نے ناپسندیدگی کا اظہارکیا اور اپنے بیان میں کہا کہ اپنے اندرونی معاملات میں مداخلت قبول نہیں کریں گے۔ سعودی عرب نے کینیڈا سے تمام تجارت اورکی جانے والی نئی سرمایہ کاری بھی معطل کر دی۔

 

یاد رہے کہ سعودی عرب نے حکومت پر تنقید کے الزام میں بلاگر رائف بدوی کو 2012 سے قید کر رکھا ہے۔ گزشتہ ہفتے ان کی بہن ثمر بدوی کو بھی گرفتار کرلیا گیا، جو حکومت پر تنقید کے ساتھ خواتین کے حقوق کیلئے بھی سرگرم ہیں۔ خواتین کے حقوق کے حوالے سے حالیہ دنوں میں سرگرم درجنوں کارکنوں کو قومی سلامتی کو نقصان پہنچانے کے ساتھ تعاون کے الزام پر حراست میں لے لیا گیا تھا۔ جن میں سے بہت سے لوگوں کو رہا بھی کیا گیا۔

شاہ سلمان بن عبدالعزیز کے بعد بااثر ترین سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے ملک میں کئی اصلاحات نافذ کی، جن میں خواتین کو ڈرائیونگ کی اجازت سمیت دیگر کئی ثقافتی سرگرمیوں کو فروغ دینے حوالے سے اہم اقدامات کیے ہیں۔

عطاء سبحانی  2 ماه پہلے

متعلقہ خبریں