سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کا رہائشی علاقوں، گھروں میں قائم نجی سکول بند کرنیکا حکم

کراچی (پبلک نیوز) شہر قائد کے گلی محلوں میں قائم پرائیویٹ سکول بھی نشانے پر آگئے۔ سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی نے رہائشی علاقوں اور گھروں میں قائم نجی اسکول بند کرنے کا حکم دے دیا۔ دوسری جانب آل پرائیویٹ اسکولز ایسوسی ایشن نے فیصلے کو مسترد کردیا۔

تصیلات کے مطابق فیسوں کے بعد نجی سکولوں کے سر پر ایک اور تلوار لٹک گئی۔ سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی نے گلی محلوں کے اندر گھروں میں بنائے گئے۔ نجی سکولوں کے خلاف کارروائی کا فیصلہ کلیا۔

ایس بی سی اے کے نوٹس میں کہا گیا ہے کہ رہائشی علاقوں میں بنائی گئی نجی درسگاہیں بند کر دی جائیں۔ رہائش کی جگہ پر کوئی کاروبار کرنا یا اسے کسی اور مقصد کے لیے استعمال کرنا جرم ہے۔

اتھارٹی  کی جانب سے پرائیویٹ سکولوں کی انتظامیہ کو سکول خالی کرنے اور متبادل جگہ منتقلی کے لیے ایک ماہ کا وقت دیا ہے جس کے بعد سکولوں کو تالا لگا کر بند کر دیاجائے گا جبکہ خلاف ضابطہ تعمیر کی گئیں زائد منزلوں کو مسمار کردیا جائے گا۔

سندھ بھر میں تقریباً پانچ ہزار سے زائد سکولوں رہائشی علاقوں میں قائم ہیں۔ جبکہ مارچ، اپریل میں امتحانات ہونا ہیں۔ ایس بی سی اے کے فیصلے سے نہ صرف نجی سکولوں بلکہ والدین کے لیے مشکلات ہوں گیں۔

دوسری جانب آل پرائیویٹ سکولز منیجمنٹ نے ایس بی سی اے کے اس فیصلہ کو ناعاقبت اندیش کارروائی قرار دیتے ہوئے وزیراعظم، گورنر سندھ، وزیراعلیٰ سندھ اور چیف جسٹس سے نوٹس لینے کی اپیل کی ہے۔

احمد علی کیف  3 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں