سپریم کورٹ نے آصف زرداری کو جواب جمع کرانے کیلئے 1ہفتے کی مہلت دے دی

اسلام آباد(پبلک نیوز) سپریم کورٹ نے جعلی اکاؤنٹس کیس میں آصف زرداری کو جواب جمع کرانے کیلے 4 دن کی مہلت دے دی، فاروق ایچ نائیک کو آصف زرداری کی وکالت جاری رکھنے کی ہدایت کر دی، جبکہ لطیف کھوسہ کی جعلی آڈیو کے معاملے پر ایف آئی اے کو تحقیقات کا حکم دے دیا۔

 

سپریم کورٹ میں جعلی بینک اکاﺅنٹس کیس کی سماعت ہوئی، چیف جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں دو رکنی بینچ جعلی بینک اکاؤنٹس کیس کی سماعت کر رہا ہے۔ جے آئی ٹی سربراہ احسان صادق سمیت اور جے آئی ٹی کے دیگر آرکاکین سپریم کورٹ میں موجود ہیں، ایڈووکیٹ جنرل سندھ سلمان ابوطالب، پیپلزپارٹی کے رہنماء راجہ پرویز اشرف، لطیف کھوسہ، فاروق ایچ نائیک، فرحت اللہ بابر سمیت دیگر عدالت میں موجود ہیں، جبکہ فاروق ایچ نائیک نے کیس میں پیش ہونے سے معذرت کرلی۔

 

عدالت عظمیٰ کی جانب فاروق ایچ نائیک کی استدعا مسترد کر دی گئی۔ وکیل لطیف کھوسہ نے کہا کہ فاروق ایچ نائیک مقدمے میں آصف زرداری کے وکیل تھے، جس پر جے آئی ٹی نے فاروق ایچ نائیک کو بھی ملزم قرار دے دیا۔ وکیل نے بتایا کہ جے آئی ٹی کی بنیاد پرفاروق نائیک نے آصف علی زرداری اور فریال تالپور کی وکالت سے معذرت کی۔

 

چیف جسٹس نے کہا کہ فاروق ایچ نائیک کو پیش ہونے سے کون روک سکتا ہے؟ ایف آئی اے کے وکیل موقف پیش کیا کہ جو دستاویزات درکار ہیں وہ فراہم کر دی ہیں۔ آصف علی زرداری کی جانب سے جواب داخل کرانے کے لئے مزید مہلت کی استدعا کی گئی۔

 

چیف جسٹس نے جس پر کہا کہ آپ کو کتنا وقت اور چاہیے، چار دن کافی ہیں، جواب دیتے ہوئے فاروق ایچ نائیک نےکہا کہ 4 روزمیں جواب داخل کرا دیں گے، جس پر عدالت نے سابق صدر آصف علی زرداری کو جعلی بینک اکاﺅنٹس کیس میں جواب جمع کرانے کے لئے ایک ہفتے تک کی ملہت دے دی۔

عطاء سبحانی  2 ماه پہلے

متعلقہ خبریں