سپریم کورٹ: کراچی میں ملٹری اراضی پر تمام کاروباری سرگرمیاں ختم کرنیکا حکم

کراچی (پبلک نیوز) سپریم کورٹ نے کراچی میں ملٹری اراضی پر تمام کاروباری سرگرمیاں ختم کرنے کا حکم دے دیا ہے۔ تجاوزات کے خلاف آپریشن جاری رکھنے، فٹ پاتھوں پر فلاحی سرگرمیاں، دستر خوان پر پابندی عائد کر دی۔

تفصیلات کے مطاق کراچی شہر میں آرمی کی زمین پر کاروباری سرگرمیوں پر پابندی عائد کر دی گئی۔ سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں جسٹس گلزار کی سربراہی میں تجاوزات کے خلاف اجلاس میں اہم فیصلے سامنے آئے۔ کمشنر کے ایم سی سمیت ایس بی سی اے اور دیگر حکام نے بھی شرکت کی۔

عدالت کی جانب سے مقامی حکومت کی کارکردگی پر برہمی کا اظہار کیا گیا۔ جسٹس گلزار احمد نے کہا کہ کوئی کتنا با اثر کیوں نہ ہو، غیر قانونی تعمیرات کی اجازت نہیں ہوگی۔ یہ طے ہے کہ زمینیں خالی ہوں گی۔

جسٹس گلزار نے استفسار کیا کہ کیا دیوار بنا کر خاص لوگوں کے لیے راستہ بنایا گیا ہے؟ سندھ حکومت نے اداروں کے تعاون نہ کرنے کا شکوہ کیا تو عدالت نے تمام حکام کو تعاون کی ہدایت کر دی۔

دوسری جانب عدالت عظمیٰ نے کراچی کا ماسٹر پلان ڈیپارٹمنٹ ایس بی سی اے سے واپس لینے کا حکم بھی دے دیا۔ کراچی میٹروپولیٹن کارپوریشن کو بھی تجاوزات کے خلاف بھرپور آپریشن جاری رکھنے کا حکم دیا۔ فٹ پاتھوں پر فلاحی سرگرمیاں، دستر خوان اور صدقہ کے بکروں کی فروخت پر پابندی عائد کر دی۔

احمد علی کیف  2 ماه پہلے

متعلقہ خبریں