بحریہ ٹاؤن کیس: سپریم کورٹ نے اسوقت کے وزیر اعلیٰ پنجاب کو طلب کر لیا

اسلام آباد (پبلک نیوز) سپریم کورٹ نے بحریہ ٹاؤن کیس میں سابق وزیراعلیٰ پنجاب اور موجود اسپیکر پنجاب اسمبلی کو کل طلب کر لیا ہے۔ چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ چودھری پرویز الہیٰ بتائیں کہ انہوں نے بطور وزیراعلیٰ پنجاب جنگلات زمین کی حدبندی کا حکم کیسے دیا؟

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ میں بحریہ ٹاؤن کیس کی سماعت کی گئی۔ سماعت کے دوران چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے اس وقت کے وزیر اعلیٰ پنجاب چودھری پرویز الہٰی کو طلب کر لیا۔ دوران سماعت چیف جسٹس نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ چودھری پرویز الہیٰ بتائیں کہ انہوں نے بطور وزیراعلیٰ پنجاب جنگلات زمین کی حدبندی کا حکم کیسے دیا؟

چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ حد بندی سے جنگلات کی زمین بحریہ ٹاؤن کو ملی اور بعد ازاں بحریہ ٹاؤن کو ملنے والی زمین سے چودھری خاندان کو زمین ملی۔ بحریہ ٹاؤن کی جانب سے وکیل اعتزاز احسن نے کہا کہ حدبندی سے وزیراعلی پرویزالہیٰ کا کوئی تعلق نہیں۔ بحریہ ٹاؤن کے خلاف عدالتی فیصلے میں ایک جج نے اختلافی نوٹ لکھا۔

معزز جج نے کہا کہ ایک جج کا اختلافی نوٹ اکثریتی فیصلے پر اثر انداز نہیں ہو سکتا۔ بعد ازاں عدالت نے کیس کی سماعت کل تک کے لیے ملتوی کر دی۔

احمد علی کیف  2 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں