معذور افراد کے لیے تعمیر ہونیوالا اسکول کھنڈرات کا منظر پیش کرنے لگا

 

جہلم(پبلک نیوز) محکمہ ایجوکیشن کی غفلت کے باعث معذور افراد کے لیے تعمیر ہونے والا اسپیشل ایجوکیشن اسکول کھنڈرات کا منظر پیش کرنے لگا ہے۔ جبکہ انتظامیہ کی جانب سے اسکول کی بہتری کے لیے کوئی اقدامات نہیں  کیے جا رہے۔

 

محکمہ ایجوکیشن کی غفلت کی وجہ سے جہلم کے نواحی علاقہ پیر چک کے مقام پر گونگے بہرے معذور بچوں کے لیے بنائے گئے سکول میں ایک دن بھی کلاسوں کا اجرا نہ ہوسکا۔ 1985 کے دور میں سپیشل بچوں کے لیے تعمیر ہونے والا سرکاری سکول حکومتی عدم دلچسپی کی نظر ہوگیا۔

 

سرکاری سکول کی بلڈنگ کی تعمیرات ہونے کے بعد کلاسز کا اجراء نہ ہوسکا۔ سکول بااثر افراد کے پالتوں جانوروں کے باڑے میں تبدیل ہوگیا۔ سکول کی عمارت کھنڈرات میں تبدیل ہوگٸی۔ دروازے کھڑکیاں بااثر افراد کی نظر ہو گئے۔

 

محکمہ ایجوکیشن کی لاپرواہی کی وجہ سے سکول میں ایک دن بھی کلاس کا أغاز نہ ہونے سے علاقہ مکینوں میں شدید غم و غصہ کی لہر پاٸی جا رہی ہے۔ سپیشل بچوں کے لیے معیاری تعیلم سرکاری سطح پر نہ مل سکی۔

 

شہریوں نے ڈپٹی کمشنر جہلم سمیت اعلی حکام سے نوٹس کی اپیل کی ہے کہ سرکاری عمارت خستہ حالی کا شکار ہوچکی ہے۔ اسکو سرکاری تحویل میں لیکر کوٸی سرکاری ادارہ قاٸم کیا جاٸے۔

 

احمد علی کیف  4 ماه پہلے

متعلقہ خبریں