بھارتی فورسز کے زیرِ حراست کشمیری اسکول ٹیچر تشدد سے شہید

پبلک نیوز: مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فورسز کے مظالم کی انتہا، بھارتی تحقیقاتی ایجنسی کے زیرِ حراست کشمیری اسکول ٹیچر کو تشدد کر کےشہید کر دیا۔ وادی میں مظاہرے پھوٹ پڑے، بھارتی فوج نے نہتے کشمیریوں پر گولیاں برسائیں، پیلٹ کے چھڑے چلائے۔ ڈھائی ماہ کے کریک ڈاؤن میں، حریت رہنما یاسین ملک، مزاحمتی اور مذہبی رہنماؤں سمیت 700 کشمیریوں کو گرفتار کیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق مقبوضہ کشمیر میں قابض فورسز کی ریاستی دہشت گردی جاری ہے۔ بھارتی فوج نے کشمیری اسکول ٹیچر کو تشدد کر کےشہید کر دیا۔ رضوان پنڈت نامی نوجوان بھارتی تحقیقاتی ایجنسی 'این آئی اے' کے زیرِ حراست تھا۔

رضوان کو گزشتہ ماہ پلواما کے علاقے اونتی پورا سے گرفتار کیا گیا تھا۔ شہادت کے بعد ضلع پلواما میں کشمیری احتجاجاً سڑکوں پر نکل آئے۔ بھارتی فوج نے نہتے کشمیریوں پر گولیاں برسائیں، پیلٹ کے چھڑے چلائے اور آنسو گیس کی شیلنگ، جس سےکئی کشمیری زخمی ہو گئے۔

 

 

حریت رہنما میر واعظ عمر فاروق نے ٹویٹ کیا کہ اونتی پورہ کے رضوان احمد کا زیرِ حراست ظالمانہ قتل پریشان کُن ہے۔ یہ فورسز کی بڑھتی آزادی کے ساتھ کشمیریوں کی بے بسی اور ان کی زندگی کو لاحق خطرے کی عکاسی کرتا ہے۔

مقبوضہ کشمیر میں ڈھائی ماہ کے کریک ڈاؤن میں، حریت رہنما یاسین ملک، مزاحمتی اور مذہبی رہنماؤں سمیت 700 کشمیریوں کو گرفتار کیا گیا ہے۔

احمد علی کیف  3 ماه پہلے

متعلقہ خبریں