سپریم کورٹ: منشیات اسمگلنگ کے الزام میں قید ہیپاٹائٹس سی کی مریضہ کو رہا کرنیکا حکم

اسلام آباد (پبلک نیوز) سپریم کورٹ نے منشیات کے الزام میں تین سال قید بھگتنے والی ہیپاٹائٹس سی کی مریضہ کو رہا کرنے کا حکم دے دیا۔ عدالت نے ریمارکس میں کہاکہ اصل ملزموں تک کیوں نہیں پہنچا گیا۔

تفصیلات کے مطابق جسٹس گلزار احمد کی سربراہی میں دو رکنی بینچ نے منشیات کی اسمگلنگ میں ملوث ملزمہ یاسیمن بی بی کی درخواست کی سماعت کی۔ یاسمین بی بی کو پانچ کلو چرس اسمگلنگ پرپانچ سال قید کی سزا سنائی گئی تھی۔

ملزمہ کے وکیل نے اپنے دلائل میں موقف اختیار کیا کہ یاسمین بی بی کے چار بچے تھیلیسیمیا سے مر چکے۔ جیل میں یاسمین بی بی کو ہیپاٹائٹس سی لاحق ہوا جبکہ ملزمہ کی ایک بچی جیل میں ہی پیدا ہوئی ہے اور ملزمہ تین سال قید کاٹ چکی ہے اور اس کی صحت خراب ہے۔

جسٹس گلزار احمد کا اپنے ریمارکس مہیں کہنا تھا کہ یہ کیا ہو رہا ہے، ہمارا سوشل سیکٹر کیا کر رہا ہے؟ اس خاتون کی مدد کرنے والا کوئی نہیں؟ حکومت بھی اس طرح کے لوگوں کے لیے کچھ نہیں کرتی۔ یہ کلاسیک کیس ہے، حالت دیکھ کر مدد کی جائے۔ اس طرح کی صورتحال ہماری ریاست کی بہت بڑی ناکامی ہے۔

جسٹس مظہر عالم مانخیل کا اپنے ریمارکس میں کہنا تھا کہ اس خاتون سے اسمگلنگ کرانے والے اصل ملزموں تک کوئی نہیں پہنچا۔ عدالت نے ملزمہ یاسمین بی بی کی سزا میں کمی کرتے ہوئے فوری رہا کرنے کا حکم دے دیا۔

احمد علی کیف  2 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں