وزیرخارجہ پاکستان کا سیکرٹری جنرل اقوام متحدہ کو ٹیلی فون، مسئلہ کشمیر کی سنگینی سے آگاہ کیا

 

اسلام آباد (پبلک نیوز) پاکستان کے وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انتونیو گوتریس سے ٹیلی فون پر رابطہ کیا ہے۔ جس میں انھوں نے مسئلہ کشمیر کی موجودہ صورتحال سے متعلق آگاہ کیا۔ یو این سربراہ نے اس مسئلہ پر اپنا کردار ادا کرتے رہنے کی یقین دہانی کرائی۔

 

تفصیلات کے مطابق مقبوضہ کشمیر میں ہونے والے مظالم اور انسانی حقوق کی پامالی سے متعلق وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی اور سیکرٹری جنرل کے درمیان ٹیلی فونک گفتگو ہوئی۔ جس میں انھوں نے سیکرٹری جنرل انتونیو گوتریس کو بتایا کہ بھارت نے گزشتہ 20 روز سے مقبوضہ کشمیرمیں مکمل لاک ڈاؤن کر رکھا ہے اور مواصلات کا نظام بھی مکمل بند ہے۔ جس کی وجہ سے مقبوضہ وادی سے کوئی خبر باہر نہیں آنے دی جا رہی۔ مقبوضہ کشمیر کی صورتحال روز بروز بگڑتی جا رہی ہے اور یہ سب اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کی قراداروں کی سنگین خلاف ورزی ہے۔

 

انھوں نے مزید بتایا کہ بھارتی وفد اپوزیشن کے رہنماؤں کی قیادت میں سرینگر گئے تھے جہاں انھیں ایئرپورٹ سے ہی واپس بھیج دیا گیا اور راہول گاندھی کو ایئرپورٹ پر ہی گرفتارکر لیا گیا۔ بھارت جیسا ملک اپنوں کے ساتھ بیٹھنے کو تیار نہیں، ہمارے ساتھ  کیا بیٹھے گا۔ 

 

کشمیر کی سنگین صورتحال پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ یہ ہے بھارت کا اصل مکرہ چہرہ جو آج دنیا نے دیکھا ہے اور یہ کہ اقوام متحدہ اس میں اپنا کردار ادا کریں۔

 

یو این سیکرٹری جنرل کا مقبوضہ کشمیرکی صورتحال پر کہنا تھا کہ سلامتی کونسل کی خواہش ہے کشمیر کا مسئلہ پُر امن طور پرحل کیا جائے۔ اس موقع پر اقوام متحدہ اپنا کردار ضرور ادا کرئی گی۔

 

واضح رہے کہ پاکستان بھارت کے 5 اگست کے اقدام کو مسترد کر چکا ہے۔ بھارت دعویٰ کرتا تھا کہ ہم دنیا کی سب سے بڑی جمہوریت ہیں لیکن  کشمیر کی صورتحال کی وجہ سے بھارت کا اصل چہرہ بے نقاب ہو گیا ہے۔ مقبوضہ کشمیرمیں رات دن مسلسل کرفیو پیلٹ گنز اورآنسو گیس کی شیلنگ کی وجہ حالات بہت تشویشناک ہوگئے ہیں۔

 

احمد علی کیف  4 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں