سینیٹ اجلاس: کشمیر میں بھارتی مظالم کیخلاف قرارداد متفقہ طور پر منظور

اسلام آباد (پبلک نیوز) سینیٹ میں کشمیر میں بھارتی مظالم روکنے کے لیے قرارداد پیش کی گئی جو متفقہ طور پر منظور کر لی گئی۔ 18 سال سے کم عمر بچیوں کی شادی کے خلاف ترمیم کے لیے بل بھی ایوان میں پیش کیا جس پر اراکین کی جانب سے اعتراض کیا۔

ڈپئی چئیرمین سلیم مانڈوی والا کی زیرصدارت سینیٹ کا اجلاس ہوا۔ سینیٹر مشاہد اللہ نے بلین ٹری منصوبہ سمیت دیگر حکومتی منصوبوں پر تنقید کی تو اپوزیشن ارکان نے بھی جوابی حملے کیے۔

سینیٹرعبدالقیوم نے کشمیر میں بھارتی مظالم کے خلاف قرارداد ایوان میں پیش کی جو متفقہ طور پر منظور کر لی گئی۔ وفاقی وزیر شیریں مزاری نے اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ حکومت کشمیریوں کے خون سے وفاداری نبھائے گی۔ حکومتی اور اپوزیشن ارکان نے متفقہ طور پر قراردار منظور کر لی گئی۔

سینیٹر شیری رحمان نے 18سال سے کم عمربچیوں کی شادی کے خلاف ترمیم کے لیے بل ایوان میں پیش کیا جس پر بعض اراکین کی جانب سے اعتراض کیا گیا۔ سول ایوی ایشن اتھارٹی آرڈیننس میں ترمیم کا بل ووٹنگ کے ذریعہ مسترد کر دیا گیا۔

احمد علی کیف  3 ماه پہلے

متعلقہ خبریں