ہم جھک کر نہیں سر اٹھا کر بات کرنے آئے ہیں، وزیر خارجہ شاہ محمود

واشنگٹن(پبلک نیوز) وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا کیپیٹل ون ایرینا واشنگٹن میں خطاب کرتے ہوئے کہنا ہے کہ ہم امریکا میں ہاتھوں میں کشکول اٹھا کر نہیں آئے بلکہ ہم خوشحال پاکستان کا خواب لے کر آئے ہیں۔ ہم جھک کر نہیں سر اٹھا کر بات کرنے آئے ہیں۔

 

تفصیلات کے مطابق وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ امریکا کے پاکستانیوں نے ثابت کر دیا کہ وہ زندہ دل ہیں۔ آپ کے ولولے کو دیکھ کر بہت لوگ خوش ہیں اور کچھ  پریشان بھی ہیں۔ ہم امن اور خوشحالی کی بنیادیں تعمیر کرنے نکلے ہیں۔ اوورسیز پاکستانیوں کی ترسیلات پاکستان کی برآمدات کے برابر ہیں۔

 

 شاہ محمود قریشی کا مزید کہنا تھا کہ اوورسیز پاکستانیوں کی پاکستان کے لیے محبت ہے اور دوسری جانب ایک وہ طبقہ ہے جو منی لانڈرنگ کر کے پیسہ بیرون ملک بھیجتا ہے۔ اووسیز پاکستانی نہ ہوتے تو تحریک انصاف کی بنیاد نہ ہوتی۔ اووسیز پاکستانی لٹیروں اور مافیا سے نجات چاہتے تھے۔

وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ وزیراعظم عمران خان آج صدر ٹرمپ سے ملاقات کریں گے۔ صدر ٹرمپ سے ہونے والی ملاقات میں وزیراعظم پاکستان کا نقشہ دکھائیں گے۔ شاہ محمود قریشی کا مزید کہنا تھا ماضی کےحکمران امریکا میں فائیو اسٹار ہوٹل میں ٹھہرتے تھے۔ عمران خان پہلے وزیراعظم ہیں جو کمرشل فلائٹ پر امریکا آئے۔ وزیراعظم وائٹ ہاؤس میں نہیں بلکہ پاکستان ہاؤس میں رہیں گے۔

عطاء سبحانی  4 ماه پہلے

متعلقہ خبریں