شاہ محمود قریشی نے انسانی حقوق کونسل میں بھارت کو بے نقاب کر دیا

 

جنیوا (پبلک نیوز) پاکستان کے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ مقبوضہ کشمیر کو دنیا کی سب سے بڑی جیل بنا دیا ہے۔ بھارت مقبوضہ کشمیر میں کشمیریوں کی اکثریت کو اقلیت بنانا چاہتا ہے۔ مقبوضہ کشمیر بھارت کا اندرونی معاملہ نہیں ہے۔ بھارت مقبوضہ کشمیر سے توجہ ہٹانے کے لیے آپریشن کر سکتا ہے۔

 

جنیوا میں اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کونسل سے خطاب کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ میں مقبوضہ جموں کشمیر کے عوام کی استدعا اور ان کا مقدمہ لے کر آیا ہوں جن کے بنیادی حقوق بھارت اپنے پاؤں تلے روند رہا ہے اور اسے کوئی پوچھنے والا نہیں۔ بھارت نے مقبوضہ جموں وکشمیر کو دنیا کے سب سے بڑے قید خانے میں تبدیل کر دیا ہے جہاں کھانے پینے کی اشیاء ہیں نہ ادویات۔

 

شاہ محمود قریشی کا مزید کہنا تھا کہ بھارت کا یہ دعویٰ جھوٹ ہے کہ یہ اقدامات اس کا اندرونی معاملہ ہے۔ اصل حقیقت یہ ہے کہ جموں و کشمیر اقوام متحدہ کے ایجنڈے پر 70 سال سے زائد عرصہ سے ایک مسلمہ تنازعہ کی صورت موجود ہے۔ 16 اگست کو جموں وکشمیر کے تنازعے پر ہونے والا سلامتی کونسل کا اجلاس اس امر کی تصدیق ہے۔

وزیرخارجہ کا کہنا تھا کہ ڈر ہے کہ بھارت ایک بار پھر "فالس فلیگ" آپریشن کرے گا۔ دہشت گردی کے عفریت کو مقبوضہ جموں و کشمیر کی صورتحال سے عالمی رائے عامہ کی توجہ ہٹانے کے لئے استعمال کر سکتا ہے اور پاکستان پر حملہ بھی کر سکتا ہے۔

 

شاہ محمود قریشی کا شرکاء سے کہنا تھا کہ بھارت کو اپنی کوشش میں منہ کی کھانا پڑے گی۔ ان کی یہ کوشش بھی ناکام ہو گی لیکن آپ کی ذمہ داری ہے کہ بھارتی قابض افواج کو بے گناہوں کا مزید خون بہانے سے روکیں۔

احمد علی کیف  1 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں