حمزہ شہباز کو مزید 10 روزہ جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے کر دیا

لاہور(شاکر محمود) احتساب عدالت نے اثاثہ جات کیس میں حمزہ شہباز کو مزید 10 روزہ جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے کر دیا۔ عدالت نے آشیانہ سکینڈل میں شہبازشریف اور شریک ملزموں کی حاضری کا عمل مکمل کر کے مزید سماعت 7 اگست تک ملتوی کر دی۔ 

 

تفصیلات کے مطابق اثاثہ جات کیس میں حمزہ شہباز کو لاہور کی احتساب عدالت کے روبرو پیش کیا گیا۔ نیب پراسیکیوٹر نے کہا کہ حمزہ شہباز سے تحقیقات میں دو بے نامی کمپنیاں سامنے آئی ہیں۔ جو ان کے ملازمین کے نام پر ہیں۔ ان کمپنیوں کے اکاؤنٹ میں پانچ ارب روپے کی ٹرانزیکشنز ہوئیں۔ ماڈل ٹاون والی جائیداد اس رقم سے خریدی گئیں۔ عدالت نے حمزہ شہباز کو 3 اگست تک مزید 10 روزہ جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے کر دیا۔


دوسری جانب آشیانہ اقبال کیس میں شہباز شریف احتساب عدالت پیش ہوئے۔ ڈیوٹی جج وسیم اختر نے شہباز شریف اور کیس کے شریک ملزموں کی حاضری لگوائی۔ عدالت نے سماعت بغیر کاروائی کیے 7 اگست تک ملتوی کر دی۔ شہباز شریف نے عدالت میں بیان دیتے ہوئے کہا کہ کرپشن کی نشاندہی پر میری حکومت نے جن کنٹریکٹرز کو فراڈ میں پکڑا انہیں پشاور میں بی آر ٹی کے ٹھیکے دے دئیے گئے۔

پیشی کے موقع پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے شہباز شریف نے کہا کہ میں نہیں جانتا یوم سیاہ میں کتنے لوگ نکلیں گے۔ یہ جانتا ہوں لوگ نواز شریف کے ساتھ ہیں۔ اس سے بڑی زیادتی اور کیا ہو گی نوازشریف کا پرہیزی کھانا بند کر کے ادویات میں بے احتیاطی برتی جا رہی ہے۔

شہباز شریف اور حمزہ شہباز کی پیشی کے موقع پر سخت سکیورٹی کر دی گئی۔ سڑکوں پر کنٹینرز اور رکاوٹیں لگا کر راستے بھی بند کر دئیے گئے۔ جس سے سائلوں، راہگیروں اور وکلاء کومشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔

عطاء سبحانی  3 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں