خدیجہ حملہ کیس، عدالتی حکم پر ملزم شاہ حسین گرفتار

اسلام آباد (پبلک نیوز) طالبہ خدیجہ پر حملہ کیس کی سماعت، سپریم کورٹ کے حکم پر شاہ حسین گرفتار، لاہور ہائیکورٹ کا فیصلہ کالعدم، خدیجہ نےعدالتی فیصلے پر تشکر کا ظہار کیا۔

 

سپریم کورٹ میں طالبہ خدیجہ صدیقی حملہ کیس کی سماعت ہوئی، چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس آصف سعید کھوسہ کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے تین رکنی بینچ نے مذکورہ کیس کی سماعت کی۔ سپریم کورٹ نے لاہور ہائیکورٹ کا فیصلہ کالعدم قرار دیتے ہوئے ملزم شاہ حسین کی گرفتاری کا حکم دے دیا۔ وکیل نے مؤقف اختیار کیا کہ ہائیکورٹ کا فیصلہ مسترد نہیں کیا جاسکتا اور زخمیوں کے طبی معائنے کرواتے وقت رشتے دار موجود تھے۔ ڈاکٹر کی جانب سے لکھا گیا کہ لڑکی ہوش میں ہے۔

 

عدالت نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ اس بات سے انکار نہیں کہ 2 لڑکیاں اور ان کے ساتھ ایک بچی زخمی ہوئی، سرجن ماہر ہوتا ہے، زخموں کی نوعیت پر ہی ڈاکٹر نے لکھا۔ جیف جسٹس جسٹس کھوسہ نے استفسار کیا کہ کیا استغاثہ نے لاہور ہائیکورٹ کا فیصلہ معطل کرنے کی التجا کی ہے؟ خدیجہ صدیقی کے وکیل نے مؤقف دیا کہ عدالت کیس ہائیکورٹ کو بھیجنے کے بجائے جو فیصلہ کرے گی وہ ہمیں قبول ہو گا، جس پر فیصلہ کے بعد ملزم شاہ حسین کو کمرہ عدالت سے گرفتار کر لیا گیا اور تھانہ سیکریٹریٹ میں منتقل کر دیا گیا۔ ملزم پر الزام ہے کہ اُس نے طالبہ کو چھری کے وار کر کے زخمی کیا تھا۔

عطاء سبحانی  6 ماه پہلے

متعلقہ خبریں